.

مصری علامہ نے موبائل فون پر خاتون کا ’جن‘ نکال دیا!

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

جنات اور بھوت پریت کے حوالے سے ضعیف الاعتقادی کے واقعات اکثر میڈیا کے توسط سے منظر عام پر آتے رہتے ہیں۔ بعض نو سرباز جنات نکالنے کی آڑ میں سادہ لوح عوام کو بے وقوف بنانے کے لیے طرح طرح کے ڈرامے رچاتے اور انہیں لوٹتے ہیں۔

اسی نوعیت کا ایک تازہ واقعہ حال ہی میں مصر میں پیش آیا جہاں ایک یونیورسٹی کے پروفیسر اور عالم دین نے موبائل فون پرایک لائیو ٹی وی پروگرام میں خاتون کا جن نکالنے کا دعویٰ کر ڈالا۔

العربیہ ڈاٹ نیٹ کے مطابق جن نکالنے والے علامہ موصوف احمد عبدہ عوض کے نام سے جانی پہنچانی شخصیت ہیں جو ایک مذہبی ٹی وی’’الفتح‘‘ کے مالک بھی ہیں اورخود جامعہ طنطا میں لغت اور اسلامیات کے استاد بھی ہیں۔

حال ہی میں ایک ٹی وی پروگرام میں انہوں نے لائیو کال کرنے والی ’’عبیر‘‘ نامی ایک خاتون کا نہ صرف جن نکالنے کا اعلان کیا بلکہ دعویٰ کیا کہ خاتون کی جان چھوڑنے والے جن نے ان کی ہدایت پر اسلام بھی قبول کیا ہے۔

ان کے بہ قول خاتون کو چھوڑںے والے جن نے ان کے ہاتھ سے نہ صرف اسلام قبول کیا بلکہ ان کی آواز میں اذان سننے کی فرمائش کی، چنانچہ انہوں نے لائیو پروگرام میں جن کی’فرمائش‘ پر اذان بھی دی۔

خاتون سے چمٹے جن کو نکالنے کے اس واقعے کی ویڈیو فویٹج سوشل میڈیا پر تیزی کے ساتھ مقبول ہو رہی ہے اور لوگ اس پر طنزیہ اور مزاحیہ انداز میں بھرپور تبصرے کرتے ہوئے علامہ موصوف کے’فن‘ کی داد دے رہے ہیں۔

سوشل میڈیا پر شہریوں نے عوام الناس میں ضعیف الاعتقادی پھیلانے والے مذہبی عناصر کے خلاف سخت کارروائی کا بھی مطالبہ کیا ہے۔ سوشل میڈیا پر جاری بحث میں عوامی حلقوں نے مصری علامہ صاحب کی طرف سے خاتون کا جن نکالنے کے کرتب کو شہرت کے حصول کا ذریعہ قرار دیا ہے۔