.

شمالی کوریا کی ایران نوازملیشیا کی معاونت کا انکشاف

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

امریکا کی انسانی حقوق سے متعلق کام کرنے والی ایک تنظیم نے انکشاف کیا ہے کہ شمالی کوریا اب بھی دہشت گردی میں ملوث عالمی تنظیموں بالخصوص ایران نواز ملیشیا کی بھرپور مالی اور عسکری مدد کررہا ہے۔

العربیہ ڈاٹ نیٹ کے مطابق امریکا کی ایک غیر منافع بخش تنظیم’’شمالی کوریا کمیٹی برائے انسانی حقوق‘‘ کی جانب سے 100 صفحات کو محیط ایک طویل رپورٹ مرتب کی ہے جس میں دہشت گردی کی معاونت کرنے والے ملکوں بالخصوص شمالی کوریا کی جانب سے ایران نواز ملیشیا کی مالی اور عسکری امداد کی تفصیلات درج ہیں۔

رپورٹ میں امریکی حکومت سے مطالبہ کیا گیا ہے کہ وہ شمالی کوریا کو دہشت گردی کی معاونت اور سرپرستی کرنے والے ممالک کی فہرست میں دوبارہ شامل کرے کیونکہ بیانگ یانگ اب بھی ایران اور شام نواز دہشت گرد گروپوں کی معاونت کررہا ہے۔

خیال رہے کہ سنہ 2008ء میں سابق امریکی صدر جارج بش کے انتخاب کے بعد امریکا نے شمالی کوریا کو دہشت گردی کی سپورٹ کرنے والے ممالک کی فہرست سے نکال دیا تھا تاہم اس کے باوجود شمالی کوریا کی دہشت گرد نوازی میں کوئی کمی نہیں آئی۔

رپورٹ میں کہا گیا ہے کہ شمالی کوریا عالمی دہشت گرد تنظیموں کی عسکری مدد کررہا ہے جو نہ صرف پوری دنیا بلکہ امریکا میں بھی انسانی حقوق کے حوالے سے نہایت خطرناک ثابت ہوسکتے ہیں۔

رپورٹ میں بتایا گیا ہے کہ شمالی کوریا کی جانب سے ایران نواز گروپوں بالخصوص لبنانی شیعہ ملیشیا حزب اللہ، فلسطین کی تحریک مزاحمت ’’حماس‘‘ اور اس قبیل کی دیگر کئی ایران نواز تنظیموں کو اسلحہ فراہم کیا جاتا ہے۔

انسانی حقوق کی تنظیم نے امریکی حکومت سے پرزور مطالبہ کیا ہے کہ وہ شمالی کوریا کو دہشت گردی کی معاونت کرنے والے ممالک کی فہرست سے نکالے جانے کے فیصلے پر نظرثانی کرے کیونکہ شمالی کوریا دہشت گردوں کی معاونت سے باز نہیں آیا ہے۔

خیال رہے کہ امریکی وزارت خارجہ نے شام، ایران، سوڈان اور کیوبا کو دہشت گردوں کی معاونت کرنے والے ملکوں کی فہرست میں شامل کررکھا ہے۔ کچھ عرصہ قبل تک شمالی کوریا بھی اس فہرست میں شامل تھا۔ امریکی واشنگٹن اور ھافانا کے درمیان مذاکرات کے بعد کیوبا کو بھی ان ملکوں کی فہرست سے نکالنے کا فیصلہ کیا گیا ہے۔

میڈیا رپورٹس کے مطابق اس وقت شام اور بعض دوسرے ملکوں میں ایران کے کئی حمایت یافتہ عسکری گروپ جنگجوں میں حصہ لے رہے ہیں۔ ان میں یمن میں حوثی باغی، عراق میں عراقی حزب اللہ، اھل الحق گروپ، البدر اور شام میں کئی افغانی اور پاکستانی جنگجو گروپ شامل ہیں جنہیں تہران کی جانب سے ہرممکن مالی اورعسکری مدد مل رہی ہے۔