.

تعز میں مزاحمت کاروں کی کارروائی، 27 حوثی باغی ہلاک

مزاحمتی کارکنوں کی کئی محاذوں پر فاتحانہ پیش قدمی

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

یمن کے شہر تعز میں جمعرات کے روز مزاحمتی تنظیموں کے کارکنوں نے ایک کارروائی کے دوران کم سے کم ستائیس حوثی باغیوں کو قتل کردیا ہے۔ دوسری جانب کئی شہروں میں مزاحمتی کارکن تیزی کے ساتھ پیش قدمی جاری رکھے ہوئے ہیں اور باغیوں کو ہر محاذ پر شکست کا سامنا ہے۔

یمن میں آئینی حکومت کی بحالی کے لیے مسلح جدو جہد کرنے والی مزاحمتی قوتوں نے ملک کے مختلف علاقوں میں حوثی باغیوں کے خلاف فاتحانہ پیش قدمی جاری رکھی ہوئی ہے۔ اطلاعات کے مطابق مزاحمتی تنظیموں اور اتحادی ممالک کی فضائی بمباری میں حوثیوں کے ایک اہم لیڈر سمیت دسیوں جنگجوہلاک اور زخمی ہوگئے ہیں۔

العربیہ ڈاٹ نیٹ کے مطابق تعز شہرمیں مزاحمتی ملیشیا اورحوثی باغیوں کے درمیان گھمسان کی جنگ جاری ہے۔ خاص طور پراسپیشل فورس کے ہیڈ ڈسٹرکٹ ہیڈ کواٹر کے قریب کلابہ کالونی میں حوثیوں کی جانب سے عام شہری مکانات پر توپ خانے اور ٹینکوں سے گولہ باری کی گئی ہے۔

ملک کے مشرقی مآرب گورنری میں بھی حوثی باغیوں اور مزاحمتی کارکنوں کے درمیان شدید جھڑپیں ہوئی ہیں جن میں اہم حوثی لیڈر طارق مبارک المشن سمیت درجنوں حوثی جنگجو ہلاک ہوگئے۔

اسی علاقے میں اتحادی ممالک کے طیاروں نے حوثیوں کے زیراستعمال PMP گاڑی کو میزائل حملے کا نشانہ بنایا گیا جس کے نتیجے میں گاڑی تباہ اور اس میں سوار تمام جنگجو ہلاک ہوگئے۔

البیضاء گورنری کے رداع شہر میں بھی حوثی باغیوں اور مزاحمتی کارکنوں کے درمیان لڑائی کی اطلاعات ہیں جہاں کئی جنگجو ہلاک بھی ہوئے ہیں۔ رداع میں القفر گورنریٹ اور الرماعہ کے مقامات پربھی حوثیوں کے مراکز کو نشانہ بنایا گیا جس کے نتیجے میں کئی باغی ہلاک اور زخمی ہوگئے۔

الجوف گورنری میں حوثیوں کے مرکزی علاقے العقبہ میں بھی گولہ باری کی گئی اور مزاحمتی کارکنوں نے کئی اہم پوسٹوں پرقبضہ کرلیا ہے۔ العقبہ اور عزہ کے مقامات پر اتحادی ممالک کے طیاروں کی بمباری سے باغیوں کی کئی گاڑیاں بھی تباہ کردی گئی ہیں۔