.

جمال خاشقجی کی موت کے تمام ذمے داروں کا احتساب ہوگا: سعودی کابینہ

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

سعودی عرب کی کابینہ نے کہا ہے کہ صحافی جمال خاشقجی کے قتل میں جن لوگوں کا بھی ہاتھ کارفرما ہے،ان سب کا احتساب ہوگا ۔ اس سے کچھ فرق نہیں پڑتا کہ یہ لوگ خواہ کوئی بھی ہوں۔

سعودی کابینہ کی سرکاری خبررساں ایجنسی ایس پی اے نے منگل کو ٹویٹر پر کابینہ کا ایک بیان جاری کیا ہے۔اس کے مطابق سعودی کابینہ نے کہا ہے کہ ’’ مملکت نے قتل کے اس واقعے سے متعلق سچائی کو منظرعام پر لانے اور ان تمام لوگوں کے احتساب کے لیے اقدامات کیے ہیں جن پر اس واقعے کی ذمے داری عاید ہوتی ہے یا جن کی نا اہلی کی وجہ سے یہ واقعہ رونما ہوا تھا‘‘۔

اس بیان سے قبل سعودی وزیر خارجہ عادل الجبیر نے مملکت کی جانب سے ترکی کے شہر استنبول میں صحافی جمال خاشقجی کے قتل کےو اقعے کی جامع تحقیقات کے لیے عزم کا ا عادہ کیا ہے۔

انھوں نے اتوار کو فاکس نیوز سے ایک خصوصی انٹرویو میں جمال خاشقجی کی موت کے واقعے کو ایک سنگین غلطی قرار دیا تھا اور کہا تھا کہ اس کیس میں ملوّث افراد کا احتساب کیا جائے گا۔انھوں نے کہا کہ’’ شاہ سلمان بن عبدالعزیز جمال خاشقجی کے قاتلوں کے احتساب کے لیے پُرعزم ہیں ۔ان کی موت کے ذمے دار افراد میں سے کسی کے بھی سعودی ولی عہد شہزادہ محمد بن سلمان سے کوئی قریبی تعلقات نہیں تھے اور نہ ان میں ان کے قریبی کوئی لوگ شامل تھے۔یہ ایک آپریشن تھا اور روگ آپریشن تھا‘‘۔