امریکاکی فلسطینی علاقوں سے متعلق پالیسی میں کوئی تبدیلی رونما نہیں ہوئی :محکمہ خارجہ

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

امریکی محکمہ خارجہ نے یقین دہانی کرائی ہے کہ فلسطینی علاقوں سے متعلق امریکا کی پالیسی میں کوئی تبدیلی رونما نہیں ہوئی ہے ۔اس نے یہ وضاحت انسانی حقوق سے متعلق اپنی ایک نئی رپورٹ کی اشاعت کے بعد جاری کی ہے ۔اس رپورٹ میں فلسطینی علاقوں سے متعلق مختلف الفاظ اور اصطلاحیں استعمال کی گئی ہیں۔

امریکی محکمہ خارجہ نے بدھ کو انسانی حقوق سے متعلق جاری کردہ اپنی سالانہ رپورٹ میں اس کے مقبوضہ فلسطینی علاقوں غربِ اردن اور غزہ کی پٹی کے ساتھ ’’ مقبوضہ ‘‘ یا ’’ زیر قبضہ‘‘ کے الفاظ استعمال نہیں کیے حالانکہ وہ ماضی میں ان فلسطینی علاقوں کے ساتھ یہ الفاظ استعمال کرتا رہا ہے۔

رپورٹ کے ایک اور حصے میں گولان کی چوٹیوں کے بارے میں بھی مختلف اصطلاح استعمال کی گئی ہے اور انھیں ’’اسرائیل کے زیر قبضہ ‘‘ کے بجائے اس کے کنٹرول میں قرار دیا گیا ہے۔

محکمہ خارجہ نے اس کی یہ وضاحت کی ہے کہ لفظ ’’ مقبوضہ‘‘ کا اس لیے استعمال نہیں کیا گیا کیونکہ اس رپورٹ میں انسانی حقوق موضوع بحث ہیں اور قانونی امور پر توجہ مرکوز نہیں کی گئی ہے۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں