.

ایران میں تربیتی طیارہ گر کر تباہ، پاسداران کا پائلٹ اور ہوابازی کی طالبہ ہلاک

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

ایران میں جمعرات کے روز وسطی صوبے سمنان کے شہر گرمسار میں ایک تربیتی طیارہ گر کر تباہ ہو گیا۔ اس کے نتیجے میں طیارے میں سوار دونوں افراد ہلاک ہو گئے۔

تسنیم نیوز ایجنسی کے مطابق سمنان صوبے میں ہلال احمر تنظیم کے نائب سربراہ آقا یحیائی نے جمعرات کی صبح بتایا کہ صوبے کے علاقے ایوانکی میں ایک ہلکے تربیتی طیارے کو حادثہ پیش آیا۔ حادثے میں ایک مرد اور ایک خاتون ہلاک ہو گئے۔

تاہم ایرانی ٹیلی وژن کے زیر انتظام یوتھ رپورٹرز کلب ایجنسی نے بتایا ہے کہ طیارے میں سوار تربیت کار کا نام مجید فتحی نجاد ہے جو ایرانی پاسداران انقلاب کے زیر انتظام "فاتحين" بریگیڈز سے تعلق رکھتا ہے۔ یہ بریگیڈ گذشتہ کئی برسوں سے شام میں بشار الاسد کی حکومت کے شانہ بشانہ لڑائی میں شریک رہا۔

ایجنسی کے مطابق طیارے کے حادثے میں ہوابازی کی تربیت حاصل کرنے والی ایک طالبہ بھی شامل ہے۔

یاد رہے کہ گذشتہ ہفتے وینٹوم F4 ماڈل کا ایک ایرانی جنگی طیارہ خلیج عربی کے پانی کے اوپر گر کر تباہ ہو گیا تھا۔ ایرانی حکام کے مطابق طیارہ "فنی خرابی" کا شکار ہوا۔ حادثے میں طیارے کا پائلٹ اور اس کا معاون محفوظ رہے۔

ایرانی فضائی بیڑے میں شاہ ایران کے زمانے کے 45 سال پرانے مخدوش حالت کے طیارے استعمال ہونے کے سبب حالیہ برسوں میں ایران میں بالخصوص فوجی طیارے گرنے کے حادثات میں اضافہ ہوا ہے۔ اگرچہ ایران فوجی اخراجات کے لیے ایک بڑا بجٹ مختص کرتا ہے تاہم بین الاقوامی پابندیوں کے نتیجے میں اسے اپنی فضائیہ کے طیاروں کو جدید بنانے میں بڑی مشکلات کا سامنا ہے۔