سعودی عرب:18953 سرجریوں کے لیے غیرمجاز عملہ کورقوم اداکرنے والے دوڈاکٹر گرفتار

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

سعودی عرب کی انسدادِ بدعنوانی اتھارٹی (نزاہہ) نے غیرمجازعملہ کو 18953 سرجریوں کے لیے رقوم ادا کرنے والے دوڈاکٹروں کو گرفتار کرلیا ہے۔

نزاہہ نے ایک بیان میں کہا ہے کہ ان ڈاکٹروں نے طبی رپورٹس میں جعل سازی کی تھی اور ان میں یہ دعویٰ کیا تھا کہ انھوں نے یہ ہزاروں آپریشن خود کیے تھے۔

ان دونوں ڈاکٹروں نے اسپتال سے ان سرجریوں کی مد میں دوکروڑ30لاکھ ڈالر سے زیادہ رقم ادا کرنے کا تقاضا کیا تھا۔

اتھارٹی نے مزید کہا ہے کہ اس نے بدعنوانی کے 17 اور کیسوں پربھی کارروائی شروع کی ہے۔ان میں الزام علیہان کے خلاف قانونی کارروائی جاری ہے۔

ان میں سب سے معروف کیس بلدیہ کے ایک ریٹائرڈ ملازم کا ہے۔اس نے شعبہ شہری منصوبہ بندی میں ملازمت کے دوران میں رشوت کے بدلے میں اراضی کی تعمیروترقی کے کئی منصوبوں کی منظوری دی تھی۔

اس کے بینک کھاتے میں دوکروڑ10 لاکھ ڈالرکی رقم پائی گئی تھی۔حکام نے اس بدعنوان ملازم کواس کے جرم کا پتاچلنے کے بعد گرفتارکرلیاتھا لیکن اس کی گرفتاری سے قبل تک اس رقم کا اس کے اثاثوں میں کوئی سراغ نہیں ملا تھا۔

نزاہہ نے محکمہ پولیس کے ایک کرنل ،ہوائی اڈے پرکام کرنے والی ایک کمپنی کے ملازم ،ایک ہوٹل کے مینجراورایک شہری کو بھی گرفتار کیا ہے۔ان سب پر89 مکینوں کوغیرقانونی طورپرٹھہرانے اور انھیں حج کے لیے مکہ مکرمہ میں المسجدالحرام اور دوسرے مقدس مقامات تک لے جانے کی کوشش کا الزام ہے۔

نزاہہ کے مطابق محکمہ پولیس کے ایک کرنل کو 201081ڈالر چوری کرنے کے الزام میں گرفتار کیا گیا ہے۔

اتھارٹی نے بلدیہ کے ایک اورسابق ملازم کو بھی بدعنوانی کے الزام میں گرفتار کیا ہے۔اس پراپنے ہی ملکیتی ایک تجارتی ادارے کو 2911384ڈالرمالیت کے ٹھیکے غیرقانونی طورپردینے کا الزام ہے۔

نزاہہ نے اپنے بیان میں مزیدکہا ہے کہ وہ سرکاری عہدے سے غیرقانونی اور ناجائزفائدہ اٹھانے والے کسی بھی ملازم کے خلاف کارروائی کرے گی اور اپنےذاتی مفاد میں عوام اور قومی خزانے کو نقصان پہنچانےوالے سرکاری ملازمین سے کوئی رورعایت نہیں برتے گی۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں