پریس رپورٹ غلط،نورڈ سٹریم پائپ لائن کی تخریب کاری میں ملوث نہیں تھے: امریکہ

تحقیقاتی صحافی سیمور ہرش کی رپورٹ تخیل کی ایک علامت: وائٹ ہاؤس، سی آئی اے اور ناروے نے بھی تردید کردی

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
3 منٹس read

وائٹ ہاؤس نے ممتاز تحقیقاتی صحافی سیمور ہرش کی اس نئی رپورٹ کی واضح طور پر تردید کردی جس میں کہا گیا تھا کہ گزشتہ سال نورڈسٹریم گیس پائپ لائن کو سبوتاژ کرنے کے پیچھے امریکہ کا ہاتھ تھا۔ہرش نے اپنی رپورٹ میں دعویٰ کیا ہے کہ امریکی بحریہ کے غوطہ خوروں نے ناروے کی مدد سے گزشتہ جون میں روس اور جرمنی کے درمیان بحیرہ بالٹک کے پانیوں کے نیچے سے گزرنے والی پائپ لائن پر دھماکہ خیز مواد نصب کیا تھا جس کے تین ماہ بعد دھماکہ کر دیا گیاتھا۔

بدھ کے روز وائٹ ہاؤس میں قومی سلامتی کونسل کی ترجمان ایڈرین واٹسن نے ہرش کی رپورٹ پر بات کی، ہرش نے یہ رپورٹ پلیٹ فارم ’’سب سٹیک‘ پر اپنے اکاؤنٹ میں شائع کی تھی۔ ایڈرین واٹسن نے کہا یہ رپورٹ تخیل کی ایک تصویر ہے۔سی آئی اے کے ترجمان نے وائٹ ہاؤس کی تردید کا اعادہ کرتے ہوئے اس رپورٹ کو یکسر اور مکمل طور پر غلط قرار دیا۔ ہرش کے اس دعوے کہ ناروے نے تخریب کاری کی حمایت کی تھی کے بارے میں ایک سوال کے جواب میں ناروے کی وزارت خارجہ نے کہا کہ یہ الزامات غلط ہیں۔ واضح رہے مغربی ممالک نے یوکرین پر حملے کے بعد ماسکو کے خلاف غصے کو بڑھاتے ہوئے ستمبر میں پائپ لائن بم دھماکے کا الزام ماسکو پر عائد کیا تھا۔ دوسری طرف سویڈش، ڈنمارک اور جرمن حکام کی تحقیقات اب تک کسی ریاست یا مجرم کی شناخت کا تعین کرنے میں ناکام رہی ہیں۔

اپنی رپورٹ میں ہرش نے کہا تھا کہ اس پائپ لائن کو اڑانے کا فیصلہ جو اس وقت بند تھی لیکن اس میں گیس کی مقدار موجود تھی بائیڈن نے خفیہ طور پر ماسکو کو یورپ کو گیس کی فروخت سے حاصل ہونے والی اربوں ڈالر کی آمدنی سے روکنے کے لیے لیا تھا۔ ہرش نے اپنی رپورٹ میں 24 فروری 2022 کو روسی حملے سے دو ہفتے قبل بائیڈن کے عوامی بیان کا حوالہ دیا کہ اگر روس نے یوکرین پر حملہ کیا تو امریکہ نئی "نورڈ اسٹریم 2" پائپ لائن کو چلانے کی اجازت نہیں دے گا۔

ہرش نے ایک گمنام ذریعہ کے حوالے سے دعویٰ کیا کہ یہ خیال پہلی بار دسمبر 2021 میں بائیڈن کے سینئر قومی سلامتی کے مشیروں کے درمیان ہونے والی بات چیت کے دوران سامنے آیا تھا کہ یوکرین پر متوقع روسی جنگ کا جواب کیسے دیا جائے۔ ہرش کے مطابق بعد میں سی آئی اے نے منصوبہ تیار کیا اور جون 2022 میں نیٹو کی مشقوں کی آڑ میں امریکی بحریہ کے غوطہ خوروں نے ناروے کی مدد سے پائپ لائن پر دھماکا خیز مواد نصب کیا جسے دور سے تباہ کیا جا سکتا تھا۔26 ستمبر کو نارڈ سٹریم پائپ لائن میں تخریک کاری کی گئی۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں