سوڈانی فوج کی منحرف سریع الحرکت فورسز کے کمانڈ سینٹر پر قبضے کی تردید

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
3 منٹس read

سوڈان کی مسلح افواج نے بغاوت کرنے والی سریع الحرکت فورسز کے کمانڈ سینٹر پرکنٹرول کی تردید کی ہے۔

فوج نے ایک بیان میں کہا ہے کہ سریع الحرکت فورسز کی جانب سے جنرل کمانڈ ، ملٹری مینوفیکچرنگ ہیڈ کواٹر اورصدارتی محل پر قبضےکے جھوٹے دعوے کررہی ہےجبکہ ان کے فوجی اور افسران بغیر علاج کےسڑکوں زخمی حالت میں پڑے ہیں اور ان کی قیادت چھپ گئی ہے۔ مسلح افواج کا کہنا ہے کہ تمام مسائل جلد حل ہوجائیں گے اور بغاوت کو کچل دیا جائے گا۔

سریع الحرکت فورسز نے ہفتے کےروزسوڈان میں مسلح افواج اور ایئر نیویگیشن کے جنرل کمانڈ کے ہیڈ کوارٹر پراپنے کنٹرول کےساتھ ساتھ ریڈیو اور ٹیلی ویژن کی پبلک اتھارٹی کے ہیڈ کوارٹر پر بھی اپنے قبضے کا دعویٰ کیا تھا۔

"برہان کے ٹھکانے کا تعین"

بیان میں دعوی کیا گیا ہے کہ سریع الحرکت فورسز کی افواج نے خود مختار کونسل کے صدر عبد الفتاح البرہان کے مقام کے ٹھکانے کے بارت میں بھی بتایا اور دعویٰ کہا کہ انہیں گرفتار کرنے کی کوشش کی جا رہی ہے۔

"ہم مصری شہریوں کو حوالے کرنے کے لیے تیار ہیں"

مروی میں مصری افواج کے بارے میں سریع الحرکت فورسز نے کہا ہے کہ وہ سکیورٹی کے حالات پرسکون ہونے کے ساتھ ہی "مصری شہریوں کو ان کی قیادت کے حوالے کرنے کے لئے تیار ہیں۔

ریپڈ ایکشن سپورٹ کے انٹلیجنس چیف کا انحراف

دوسری طرف سوڈانی فوج نے ہفتے کے روز اعلان کیا کہ سریع الحرکت فورسز کے انٹلیجنس کے سربراہ میجر جنرل الخیر ابو مریدات منحرف ہونے کے بعد ان کے ساتھ شامل ہوگئے ہیں۔

فوج نے فیس بک پر کہا کہ ابو مریدات نے محکمہ انٹیلیجنس کے حوالے کیا گیا ہے۔

شہری اموات کی اعلی تعداد

اس تناظر میں سوڈان ٹریبیون اخبار نے اطلاع دی ہے کہ فوج کے درمیان جھڑپوں اور دارفور کے صوبے میں نیالہ شہروں میں سریع الحرکت فورسز اور فوج کے درمیان جھڑپوں میں سویلین اموات کی تعداد میں اضافہ ہوا ہے۔

اخبار نے الفشر ایجوکیشنل اسپتال میں ایک پیرامیڈک کے حوالے سے بتایا ہے کہ 16 زخمی اسپتال لائے گئے ہیں جن میں سے کچھ کی حالت خطرناک ہے۔

نیالہ میں جھڑپوں کے دوران ہفتے کے روز کم سے کم پانچ افراد ہلاک ہوگئے ہیں۔

ساتھ ہفتے کے شروع میں پانچ افراد ہلاک ہوگئے تھے۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں