آبدوز ٹائٹن کا دھماکہ تعجب کی بات نہیں تھی: فلم "ٹائی ٹینک" کے ڈائریکٹر کا رد عمل

مشہور ڈائریکٹر جیمز کیمرون نے ٹائٹن آبدوز کے ڈیزائن میں ایک بنیادی خامی کے بارے میں بھی بات کی

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size

1997 میں شاندار کامیابی حاصل کرنے والی فلم ’’ٹائی ٹینک‘‘ کے ہدایت کار جیمز کیمرون نے انکشاف کیا کہ آبدوز ’’ٹائٹن‘‘ کے پھٹنے کی خبر سامنے آئی ہے۔ اس طرح کے واقعہ ہونا کوئی تعجب کی بات نہیں ہے۔ انہوں نے کہا کہ آبدوز کے ڈیزائن میں بنیادی خرابی تھی۔

واضح رہے یہ آبدوز 1912 میں ڈوبنے والے بحری جہاز ’’ ٹائی ٹینک‘‘ کا ملبہ دیکھنے کے لیے سمندر میں اتری تھی۔ اس آبدوز میں پاکستانی باپ بیٹے سمیت 5 افراد سوار تھے۔ جیمز کیمرون خود بھی ٹائی ٹینک کا ملبہ دیکھنے کے لیے 33 مرتبہ سمندر میں غوطہ لگا چکے ہیں۔

انہوں نے سی این این کو انٹرویو دیتے ہوئے مزید کہا کہ جب انھوں نے پہلی بار آبدوز کے واقعے کی خبر سنی تو انھوں نے اس معاملے سے متعلق ذرائع سے رابطہ کیا۔

انہوں نے کہا کہ واحد منظر جو اس بات کی وضاحت کر سکتا ہے کہ کیا ہوا ہے وہ ایک انفلوژن ہے۔ یہ ایک ایسا شدید جھٹکا ہے کہ اس نے آبدوز کے مقام کا پتہ لگانے کے لیے مادر جہاز کے ذریعے استعمال کیے جانے والے ٹرانسپونڈر پر مشتمل سسٹم کو ختم کر دیا۔

ڈائریکٹر نے کہا کہ میں نے کچھ اضافی معلومات حاصل کی ہیں جو اس بات کی تصدیق کرتی ہیں کہ آبدوز پھٹ گئی تھی۔ جھوٹی امیدیں بڑھتی ہی چلی گئیں کیونکہ ریسکیو ٹیمیں اگلے دنوں میں لاپتہ مسافروں کو تلاش کرتی رہیں ۔ میں نے یہ امید کرتے ہوئے کہ شاید میں غلط ہوں بعد میں بی تلاش کی کوششیں جاری رکھیں لیکن مجھے پوری طرح معلوم تھا کہ تلاش کرنے کا کوئی فائدہ نہیں اور میں نے مسافروں کے اہل خانہ سے اظہار تعزیت کیا۔

مقبول خبریں اہم خبریں