داعش کے خلاف لڑنے والا اتحاد حماس سے بھی لڑے: فرانسیسی صدر

اسرائیل پر حماس کے حملے میں مارے جانے والے 1400 افراد میں 30 فرانسیسی شہری بھی شامل تھے

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
1 منٹ read

فرانسیسی صدر ایمانوئل میکرون نے کہا ہے کہ داعش کے خلاف لڑنے والا اتحاد حماس سے بھی لڑے۔ دہشت گردی اسرائیل اور فرانس کا مشترکہ دشمن ہے اور اسرائیل اس جنگ میں اکیلا نہیں ہے۔

اسرائیلی وزیر اعظم نیتن یاہو کے ساتھ مشترکہ پریس کانفرنس کے دوران ا نہوں نے کہا کہ اسرائیل پر حماس کے حملے میں مارے جانے والے 1400 افراد میں 30 فرانسیسی شہری بھی شامل تھے۔

اسرائیل کے دورے پر آئے فرانسیسی صدر نے تجویز پیش کی کہ داعش کے خلاف لڑنے والا اتحاد حماس سے بھی لڑے۔ انہوں نے کہا کہ فرانس پہلے ہی عراق اور شام میں داعش کے خلاف جاری کارروائیوں میں شریک ہے اور وہ داعش کے خلاف بین الاقوامی اتحاد کا حصہ بننے کے لئے تیار ہے۔

فرانسیسی صدر نے اس موقع پر اسرائیل پر زور دیا کہ وہ فلسطین کے ساتھ تنازعہ کےحل کے لئے سیاسی اپروچ اپنائے۔

واضح رہے کہ فرانسیسی صدر سے پہلے امریکی صدر جو بائیڈن اور برطانیہ کے وزیر اعظم رشی سونک بھی یکجہتی کے اظہار کے لئے اسرائیل کا دورہ کر چکے ہیں۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں