اسرائیل کی طرف سے فلسطینیوں کی بڑھتی گرفتاریاں قابل تشویش ہیں: اقوام متحدہ

اسرائیلی جیلوں میں دوران حراست ہونے والی اموات اور تشدد کے واقعات کی تحقیقات ہونا چاہیے

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

فلسطینی علاقوں میں اقوام متحدہ کے انسانی حقوق کے ہائی کمشنر کے دفتر نے اسرائیل کی جانب سے فلسطینیوں کی گرفتاریوں میں نمایاں اضافے پر اپنی گہری تشویش کا اظہار کیا اور کہا یہ بڑھتی ہوئی یہ گرفتاریاں قابل تشویش ہیں۔ ہائی کمشنر نے اسرائیل کی جیلوں میں قید فلسطینیوں کی اموات اور قیدیوں پر تشدد کے الزامات کی تحقیقات کا مطالبہ بھی کردیا۔

دفتر سے جاری بیان میں کہا گیا ہے کہ اسرائیل نے سات اکتوبر کو غزہ پر جنگ کے آغاز کے بعد سے مشرقی القدس اور مقبوضہ مغربی کنارے میں 3000 سے زیادہ فلسطینیوں کو گرفتار کرلیا ہے۔ ریکارڈ تعداد میں فلسطینیوں کوبغیر کسی الزام یا مقدمہ کے گرفتار کرلیا گیا ہے۔

انہوں نے مزید کہا کہ دو ماہ کے اندر اسرائیلی جیلوں میں چھ فلسطینیوں کی موت ہوئی ہے۔ کئی دہائیوں میں اتنی مختصر مدت میں اموات کی یہ سب سے بڑی تعداد ہے۔ بہت سے لوگوں نے کہا ہے کہ جاں بحق ہونے والوں کو گارڈز نے مارا پیٹا اور بدسلوکی کی جس میں عصمت دری کی دھمکیاں بھی شامل ہیں۔

انہوں نے مزید کہا کہ حراست میں ہونے والی تمام اموات اور تشدد اور دیگر اقسام کے ناروا سلوک کے الزامات کی تحقیقات ہونی چاہیے اور احتساب کو یقینی بنایا جانا چاہیے۔ اسرائیل جیل سروس نے کہا کہ اس کے تمام قیدیوں کو قانون کی دفعات کے مطابق حراست میں لیا گیا ہے اور قیدیوں کی موت کے حوالے سے تفتیش جاری ہے۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں