قطری عدالت نے آٹھ انڈین نیوی اہلکاروں کی سزائے موت ختم کر دی: انڈیا

انڈین وزارت خارجہ نے مزید کہا ہے کہ ’اس کیس کی کارروائی کی خفیہ اور حساس نوعیت کی وجہ سے اس موقع پر مزید کوئی تبصرہ کرنا مناسب نہیں ہوگا

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
3 منٹس read

قطر کی ایک عدالت نے انڈیا کے آٹھ سابق نیوی افسران کی سزائے موت میں کمی کر دی ہے۔

جعمرات کو عرب نیوز کی رپورٹ میں انڈیا کی وزارت خارجہ کے حکام کا حوالہ دیتے ہوئے بتایا گیا ہے کہ یہ قطر کی ایک سکیورٹی فرم ظاہرہ گلوبل میں ملازمت کر رہے تھے جو قطری نیول فورسز کو تربیت دینے کا کام کرتی ہے۔

رپورٹ کے مطابق یہ افراد اگست 2022 سے حراست میں ہیں۔ انڈین حکومت کی جانب سے رواں برس اکتوبر میں کہا گیا تھا کہ قطر کی عدالت نے ان کو موت کی سزا سنائی ہے۔

قطر میں انڈین بحریہ کے ان آٹھ ریٹائرڈ افسران کی ’جاسوسی‘کے الزام میں گرفتاری کی خبر 25 اکتوبر 2022 کو ڈاکٹر میتو بھارگوا نامی انڈین خاتون کی ایکس (سابقہ ٹوئٹر) پوسٹ سے سامنے آئی تھی۔

رواں سال اکتوبر میں قطر کی عدالت نے ظاہرہ گلوبل ٹیکنالوجیز اینڈ کنسلٹنسی سروسز میں کام کرنے والے ان آٹھ سابق انڈین نیوی افسران کو موت کی سزا سنائی تھی۔

تاہم اب انڈیا کی وزارت خارجہ کی جانب سے جاری بیان میں کہا گیا ہے کہ ان کی سزا میں کمی کر دی گئی ہے۔

بیان میں مزید کہا گیا ہے کہ ’قطر میں ہمارے سفیر اور دیگر حکام آج اپیل کورٹ میں اہل خانہ کے ہمراہ موجود تھے۔ ہم اس معاملے کے آغاز سے ہی ان کے ساتھ کھڑے ہیں اور ہم ہر طرح کی قونصلر اور قانونی مدد جاری رکھیں گے۔‘

’ہم قطری حکام کے ساتھ بھی اس معاملے کو اٹھاتے رہیں گے۔‘

انڈین وزارت خارجہ نے مزید کہا ہے کہ ’اس کیس کی کارروائی کی خفیہ اور حساس نوعیت کی وجہ سے اس موقع پر مزید کوئی تبصرہ کرنا مناسب نہیں ہوگا۔‘

انڈین وزارت خارجہ نے رواں ماہ کے آغاز میں بتایا تھا کہ قطر میں انڈیا کے سفیر نے عرب ملک میں سزائے موت پانے والے انڈین نیوی کے آٹھ سابق افسروں کے ساتھ ملاقات کی تھی۔

ان کے مطابق یہ ملاقات تین دسمبر کو جیل میں ہوئی تھی۔

دوسری جانب رواں سال اکتوبر میں ہی انڈین وزیراعظم نریندر مودی اور قطر کے امیر شیخ تمیم بن حماد آل ثانی کے درمیان کوپ 28 کے موقع پر ملاقات ہوئی تھی۔

یہ ملاقات انڈین حکومت کی جانب سے 26 اکتوبر کو قطر کی ایک عدالت کی جانب سے جاسوسی کے الزام میں آٹھ سابق نیوی اہلکاروں کو سنائی گئی سزائے موت کے خلاف اپیل دائر کرنے کے چند دن بعد ہوئی تھی۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں