اسرائیل کو تنہائی کا خطرہ،کولمبیاغزہ جنگ کے دوران کوئلے کی فراہمی محدود کرنےکا خواہاں

وزارتِ تجارت نے فیصلہ ساز کمیٹی کو سفارش کی کہ اسرائیل کو ایندھن کی ترسیل "محدود" کی جائے

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

کولمبیا کی وزارتِ تجارت اسرائیل کو تنہا کرنے کی تازہ ترین کوشش میں یہودی ریاست کو کوئلے کی فروخت پر پابندی کا مطالبہ کر رہی ہے جبکہ غزہ جنگ میں فلسطینی ہلاکتوں کی تعداد بڑھ رہی ہے۔

بلومبرگ اور اس معاملے کی براہِ راست معلومات رکھنے والے ایک شخص کی ملاحظہ کردہ ایک اندرونی دستاویز کے مطابق وزارت نے ٹیرف اور غیر ملکی تجارت پر فیصلہ دینے والی کمیٹی کو سفارش کی کہ اسرائیل کو ایندھن کی ترسیل "محدود" کی جائے۔

اس سال لاطینی امریکہ کی حکومتوں کے ساتھ اسرائیل کے تعلقات خراب ہو گئے ہیں لیکن اب تک اس کا اظہار تجارتی پابندیوں کے بجائے زیادہ تر سفارتی اقدامات کی صورت میں ہوتا رہا ہے۔ جنوبی امریکہ سے تعلق رکھنے والا کولمبیا اسرائیل کو کوئلہ فراہم کرنے والا سب سے بڑا ملک ہے جس نے گذشتہ سال تقریباً 450 ملین ڈالر کا ایندھن فروخت کیا تھا۔

وزارتِ تجارت نے کہا، کوئلے کی پابندیوں کا مقصد "مسلح تنازعات کو ختم کرنے میں مدد" کرنا ہے اور اس پابندی کو تنازعہ ختم ہونے تک برقرار رہنا چاہیے۔ صرف دو فراہم کنندگان ہیں: الاباما میں قائم ڈرمنڈ کمپنی انکارپوریشن اور کولمبیا کی ذیلی کمپنی گلین کور۔

ترک صدر رجب طیب ایردوآن کی حکومت نے گذشتہ ماہ اسرائیل کے ساتھ تجارت تقریباً مکمل طور پر روک دی تھی۔

الفاظ کی جنگ

کولمبیا اور اسرائیل کے درمیان تاریخی طور پر اچھے تعلقات رہے ہیں اور ان کے درمیان 2020 سے آزاد تجارتی معاہدہ نافذ ہے۔

لیکن ان کے مابین تعلقات حالیہ مہینوں میں تیزی سے خراب ہوئے جب کولمبیا کے صدر گستاو پیٹرو نے غزہ میں مداخلت کو "نسل کشی" قرار دیا جبکہ اسرائیلی وزیرِ اعظم بینجمن نیتن یاہو نے پیٹرو کو "حماس کا یہود دشمن حامی" کہا۔ دونوں ممالک نے مئی میں سفارتی تعلقات منقطع کر لیے تھے۔

کوئلے کی برآمدات کے بارے میں فیصلہ کرنے والی کمیٹی میں تجارت، خزانہ اور توانائی کی وزارتوں کے ساتھ ساتھ ٹیکس ایجنسی کے نمائندگان بھی شامل ہیں۔

اس معاملے کی براہِ راست معلومات رکھنے والے شخص کے مطابق برآمدات کو محدود کرنے کے بارے میں فیصلہ جمعرات تک ہو سکتا ہے۔ کولمبیا کی صدارت اور وزارتِ تجارت نے تبصرے کے لیے پیغامات کا فوری طور پر جواب نہیں دیا جو عام دفتری اوقات کے بعد بھیجے گئے۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں