.

ابراہیمی غیر جانبدار رہیں، فریق نہ بنیں: شامی اپوزیشن کا انتباہ

شامی اپوزیشن جماعتیں ہفتے کے روز استنبول میں مشاورت کیلیے جمع ہونگی

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

شامی اپوزیشن اتحاد نے شام کیلیے اقوام متحدہ اور عرب لیگ کے مشترکہ نمائندے الاخضر ابراہیمی پر زور دیا ہے کہ وہ شام کے معاملات میں فریق بننے کے بجائے خود کو غیر جانبدار رکھیں۔ شامی اپوزیشن نے یہ مطالبہ ابراہیمی کے اس بیان کے ردعمل کے طور پر کیا ہے جس میں انہوں نے شامی اپوزیشن کے باہمی اختلافات کا میڈیا کے ساتھ ذکر کیا تھا۔

شامی اپوزیشن اتحاد نے کہا ہے ''شام کے عوام سمجھتے ہیں کہ مشترکہ نمائندہ ان کی مشکلات کا مداوا کرنے کا ذریعہ بنں یا کم از کم خود کو غیر جانبدار رکھیں۔''

واضح رہے ایک روز قبل ابراہیمی نے جنیوا ٹو کے انعقاد میں تاخیر ہونے کو تسلیم کرتے ہوئے کہا تھا کہ اس سلسلے میں حتمی تاریخ کے تعین میں کامیابی نہیں ہوئی ہے۔

شامی اپوزیشن نے ابراہیمی پر اعتراض کیا ہے کہ انہوں نے جنیوا ٹو کے انعقاد میں تاخیر کا الزام بالواسطہ طور پر شام کی اپوزیشن جماعتوں پر عاید کیا ہے۔

خیال رہے ابراہیمی نے اس اتحاد کے باہمی اختلافات کو امن کانفرنس کے انعقاد کی راہ میں اہم رکاوٹ قرار دیتے ہوئے زور دیا تھا کہ ''شامی اپوزیشن کو ایک قابل بھروسہ وفد کی تشکیل کیلیے آگے بڑھنا چاہیے، یہ امن کانفرنس کے انعقاد کی سمت میں ایک اہم پیش رفت ہو گی۔''

اس سے پہلے ہی شامی اپوزیشن نے اپہلے ہی علان کر رکھا ہے کہ اگر بشار الاسد نے اقتدار نہ چھوڑا تو امن کانفرنس میں اپوزیشن جماعتیں حصہ نہیں لیں گی۔

واضح رہے شامی اپوزیشن ہفتے کے روز استنبول میں امن کانفرنس میں شرکت پر غور کے حوالے سے باہمی مشاورت کے لیے اجلاس منعقد کرنے جا رہی ہے، تاہم اپوزیشن میں شامل ایک اہم گروپ کا عدم شرکت کیلیے اصرار ہے۔