.

عراق :داعش کے حملے میں 23 فوجی اور سنی جنگجو ہلاک

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

عراق کے شورش زدہ مغربی صوبے الانبار میں دولت اسلامیہ (داعش) کے ایک حملے میں تئیس فوجی اور حکومت نواز سنی جنگجو ہلاک ہوگئے ہیں۔

عراقی حکام کے مطابق داعش کے جنگجوؤں نے صوبائی دارالحکومت الرمادی سے شمال میں واقع دیہی علاقے جرامشہ میں فوجیوں اور سنی جنگجوؤں پر حملہ کیا ہے اور اس میں سترہ فوجی اور چھے سنی جنگجو مارے گئے ہیں۔

ان عراقی عہدے داروں نے اپنی شناخت ظاہر نہ کرنے کی شرط پر بتایا ہے کہ داعش کے جنگجوؤں نے فوجیوں پر خودکش بم حملہ کیا ہے اور مارٹر گولے فائر کیے ہیں۔واقعے میں الانبار میں عراقی فوج کے داعش مخالف کارروائیوں کے انچارج میجر جنرل قاسم الدلیمی معمولی زخمی ہوئے ہیں۔

اس واقعے سے دو روز قبل ہی داعش کے جنگجوؤں نے الانبار میں دو حملوں میں پچاس فوجیوں کو ہلاک کردیا تھا۔داعش نے گذشتہ سال جون سے الانبار کے بیشتر علاقوں پر قبضہ کررکھا ہے اور انھوں نے صوبائی دارالحکومت الرمادی پر مئی میں قبضہ کر لیا تھا۔اب عراقی فوج ان کے زیر قبضہ علاقوں کو واگزار کرانے کے لیے ایک بڑی کارروائی کررہی ہے اور علاقے کے داعش مخالف سنی جنگجو اس کا ساتھ دے رہے ہیں۔