.

فلسطینی خاتون رکن پارلیمنٹ اسرائیلی جیل سے رہا

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

اسرائیلی حکام نے فسلطینی قانون ساز کونسل (پارلیمنٹ) کی خاتون رکن خالدہ جرار کو جمعے کے روز رہا کرنے کا اعلان کیا ہے۔ پندرہ ماہ جیل کاٹنے والی رکن پارلیمنٹ کو طولکرم شہر کے نزدیک جبارہ چیک پوسٹ پر رہا کیا جائےگا۔

بائیں بازو کی فلسطینی تنظیم "پاپولر فرنٹ فار لبریشن آف پیلیسٹائن" کے سیاسی بیورو کی رکن خالدہ جرار کو گزشتہ سال 2 اپریل کو مقبوضہ مغربی کنارے کے شہر البیرہ میں ان کے گھر سے گرفتار کیا گیا تھا۔ اسرائیلی عدالت نے خالدہ کو 15 ماہ قید اور 10 ہزار شیکل (2600 ڈالر) جرمانے کی سزا سنائی تھی۔

2006ء میں قانون ساز کونسل کی رکن منتخب ہونے والی 50 سالہ خالدہ کو اس سے قبل قابض اسرائیلی حکام کی جناب سے 1989 میں بھی گرفتار کیا جا چکا ہے۔

قابل ذکر بات یہ ہے کہ اسرائیلی فوج 2006ء کے بعد سے فلسطینی قانون ساز کونسل کے نصف سے زیادہ ارکان کو گرفتار کر چکی ہے جن میں اکثریت کا تعلق حماس تنظیم سے ہے۔

خالدہ جرار کی رہائی کے بعد اب بھی اسرائیلی جیلوں میں 6 فلسطینی ارکان پارلیمنٹ باقی ہیں جن میں 4 کا تعلق حماس تنظیم جب کہ ایک ایک رکن کا فتح تحریک اور پاپولر فرنٹ سے ہے۔