.

مصر : پولیس کی گاڑی پرمسلح افراد کی فائرنگ ، افسر اور ڈرائیور ہلاک

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

مصر کے دارالحکومت قاہرہ کے نواح میں مسلح افراد نے اتوار کی صبح پولیس کی ایک گاڑی پر فائرنگ کردی ہے جس کے نتیجے میں ایک پولیس افسر سمیت دور افراد ہلاک اور دو اہلکار زخمی ہوگئے ہیں۔

مصر کی وزارت داخلہ کے ایک بیان کے مطابق پولیس اہلکار ایک گاڑی میں قاہرہ کے نواحی علاقے نضا جدید میں معمول کی گشت پر تھے ۔اس دوران میں آتشیں رائفلوں سے مسلح چار نامعلوم مسلح افراد نے ان کی منی بس پر فائرنگ کردی ۔اس کے بعد وہ سیاہ رنگ کی ایک کار میں فرار ہونے میں کامیاب ہوگئے۔

بیان کے مطابق فائرنگ سے پولیس کپتان محمد احمد عبدالرازق اور منی بس کا ڈرائیور مارے گئے ہیں۔حملے میں ان کے ساتھ سفر کرنے والے دو پولیس اہلکار زخمی ہوئے ہیں۔وزارت کا کہنا ہے کہ مشتبہ حملہ آوروں کی تلاش کے لیے علاقے میں سکیورٹی فورسز کو تعینات کردیا گیا ہے۔

فور ی طور پر ان حملہ آوروں کی شناخت کا پتا نہیں چل سکا اور نہ کسی گروپ نے اس حملےکی ذمے داری قبول کی ہے۔ قاہرہ میں فائرنگ کے اس واقعے سے چند ہفتے قبل ہی ایک جھڑپ اور سکیورٹی فورسز کی چھاپا مار کارروائی میں ایک پولیس افسر زخمی اور سات مشتبہ جنگجو ہلاک ہوگئے تھے۔

مصر میں جولائی 2013ء میں پہلے منتخب صدر ڈاکٹر محمد مرسی کی حکومت کے خاتمے کے بعد سے انتہا پسند گروپ سکیورٹی فورسز کو اپنے حملوں میں نشانہ بنا رہے ہیں اور ان کے حملوں میں سیکڑوں فوجی اور پولیس اہلکار ہلاک ہوچکے ہیں۔گذشتہ سال فروری میں مصری صدر عبدالفتاح السیسی کی ہدایت پر سکیورٹی فورسز نے شورش زدہ جزیرہ نما سیناء ، دارالحکومت قاہرہ اور دوسرے علاقوں میں داعش اور دوسرے مسلح انتہا پسندوں کے خلاف ایک بڑی کارروائی شروع کی تھی۔اس کارروائی میں اب تک 600 جنگجو ہلاک اور 40 فوجی مارے جاچکے ہیں۔