.

سعودی فوٹو گرافر کو اتفاقیہ ہاتھ لگنے والے شاہین کی تصاویرکی سوشل میڈیا پر دھوم

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

سعودی عرب کے ایک مقامی فوٹو گرافر فیصل بن زرعہ مملکت میں شاہین کے شوقین عبدالعزیز آل حسن سے اتفاقیہ ملاقات کے انتہائی نتیجہ خیز ثابت ہوئی کیونکہ اس ملاقات کے دوران بن زرعہ نے شاہین کی ایسی نایاب تصاویر حاصل کیں جن کی سوشل میڈیا پرپوسٹ ہوتے ہی دھوم مچ گئی۔

العربیہ ڈاٹ نیٹ سے بات کرتے ہوئے بن زرعہ نے کہا کہ وہ قدرتی مناظر، پرندوں اور دیگر عام دلچسپی کے حامل مقامات اور اشیا کی تصاویر کا شوقین ہے۔ ایک روز اس کی ملاقات عبدالعزیز آل حسن سے ہوئی۔ عبدالعزیز باز پالنے کے شوقین ہیں اور انہیں کئی شاہین خریدے اور فروخت کیے ہیں۔ فیصل بن زرعہ نے عبدالعزیز آل حسن کے پاس موجود بازوں کی تصاویر لیں اور انہیں سوشل میڈیا پر پوسٹ کیا۔ ان تصاویر کو غیرمعمولی پذیرائی ملی اور شہریوں نے اسے بے حد پسند کیا ہے۔


ایک سوال کے جواب میں بن زرعہ نے بتایا کہ اس کی عبدالعزیز آل حسن سے ملاقات شمالی الریاض میں حطین کالونی کے قریب ہوئی۔ میں اس وقت وہاں پر قدرتی مقامات کی تصاویر لینے گیا تھا اور مجھے اس وقت غروب آفتاب کے منظر کا انتظار تھا۔ اس دوران میں نے دور سے ایک شخص کو دیکھا جو پرندوں کی طرف اشارہ کرر رہا تھا۔ یہ عبدالعزیز آل حسن تھا کو اپنے شاہینوں کو سدھا رہا تھا۔ میں اس کے پاس گیا اور اپنا تعارف کرایا۔ میں نے اس کے شاہینوں‌ کی تصاویر لینے کی اجازت چاہی۔

پہلی تصاویر کی کامیابی کے بعد میں نے عبدالعزیز آل حسن کے ساتھ 29 دسمبر 2020ء کو شمالی ریاض سے 70 کلو میٹر دور پورے چاند کی تصاویر لینے اور اس موقعے پر شاہین کی تصاویر اتارنے کا فیصلہ کیا۔ اس بار لی جانے والی تصاویر بھی سوشل میڈیا پر وائرل ہوئی اور انہیں بے حد پسند کیا گیا۔