.

احمدی نژاد کی صدارتی امیدوار قبول نہ کرنے پر ریاستی راز فاش کرنے کی دھمکی

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

ایران میں آنے والے چند روز میں 18 جون کو ہونے والے صدارتی انتخابات کے لیے نامزد امیدواروں کے ناموں کا اعلان کیا جا رہا ہے۔ توقع ہے کہ ایران کی دستوری کونسل جلد ہی ان ناموں کا اعلان کرے گی۔ دوسری طرف سابق صدر محمود احمدی نژاد نے کہا ہے کہ وہ صدارتی انتخابات میں حصہ لینے کے پوری طرح تیار ہیں اور کسی کو اس راہ میں رکاوٹ نہیں بننے دیں گے۔

انہوں نے دھمکی آمیز لہجے میں کہا ہے کہ اگر مجھے صدارتی امیدوار قبول نہیں‌کیا گیا اور میری کاغذات نامزدگی مسترد کیے گئے تو میں ریاست کے بہت سے راز فاش کردوں گا۔
انہوں نے ایک بیان میں کہا ہے کہ اگر دستوری کونسل نے ان کے کاغذات نامزدگی منظور نہ کیے وہ انتخابات کا بائیکاٹ کرسکتے ہیں۔

بدھ کے روز سابق ایرانی صدر احمدی نژاد نے اپنی انتخابی مہم کے دوران 'آستانہ اشرفیہ' ہر کا دورہ کیا۔ یہ شہر شمالی ایران کے ضلع جیلان میں واقع ہے۔ انہوں نے اپنے حامیوں کے ایک اجتماع سے خطاب میں کہا کہ مجھے مسترد کیا گیا تو میں نہ صرف انتخابات کا بائیکاٹ کروں گا بلکہ بہت سے رازوں سے بھی پردہ اٹھاؤں گا۔

ایران میں غیر مصدقہ اخباری اطلاعات کے مطابق دستوری کونسل احمدی نژاد کے کاغذات نامزدگی قبول نہیں کرے گی۔ بعض مبصرین کا خیال ہے کہ دستوری کونسل احمدی نژاد کے کاغذات نامزدگی منظور کرے گی تاکہ زیادہ سے زیادہ لوگوں کو پولنگ مراکز پر لایا جاسکے۔