یمن اور حوثی

یمن جنگ میں یو این ثالثی میں تعاون کرنے پر سعودی عرب کا خیر مقدم کرتےہیں:سلامتی کونسل

تمام فریق مذاکرات جاری رکھیں اور امن عمل میں تعمیری طور پر شامل ہوجائیں: کونسل ارکان کا بیان

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
1 منٹ read

اقوام متحدہ کی سلامتی کونسل کے ارکان نے یمن میں اقوام متحدہ کی ثالثی کی کوششوں کے لیے سعودی عرب اور سلطنت عمان کی مسلسل حمایت کا خیرمقدم کیا ہے۔ سلامتی کونسل نے تمام فریقوں سے مذاکرات جاری رکھنے اور امن کے عمل میں تعمیری انداز میں شامل ہونے کا مطالبہ بھی کیا۔

کونسل کے ارکان نے ایک پریس بیان میں کہا ہے کہ حالیہ سعودی عمانی مذاکرات ایک جامع جنگ بندی تک پہنچنے اور یمن کے لیے اقوام متحدہ کے خصوصی ایلچی ہینز گرینڈبرگ کی سرپرستی میں جامع یمنی سیاسی مذاکرات کے انعقاد کی جانب قابل قدر اقدامات کی نمائندگی کر رہے ہی۔ ان مذاکرات کی کوشش متفقہ شرائط اور متعلقہ سلامتی کونسل کے فیصلوں کے مطابق ہو رہی ہے۔

سلامتی کونسل کے ارکان نے سعودی عرب اور سلطنت عمان کے دو وفود کے حالیہ دورہ یمن اور حوثیوں سے ان کی ملاقات کی بھی تعریف کی۔ کونسل نے کہا کہ سیاسی تصفیہ تک پہنچنے اور بالآخر یمنی عوام کے مصائب کے خاتمے کے لیے کوششوں کی مسلسل حمایت کی ضرورت ہے۔

خیال رہے 9 اپریل کو سعودی اور عمان کے دو وفود نے دارالحکومت صنعا کا دورہ کیا تھا۔ انہوں نے یمن میں امن قائم کرنے کے لیے گہری علاقائی اور بین الاقوامی کوششوں کے ایک حصے کے طور پر حوثی گروپ کے ساتھ گفت و شنید کی تھی۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں