غرب اردن میں اسرائیلی فوج کی فائرنگ سے دو فلسطینی شہید

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

اسرائیلی فوج نے جمعرات کو کہا ہے کہ اس نے شمال مغربی کنارے کے شہر طولکرم کے قریب شوفہ قصبے کے قریب دو فلسطینیوں کو اس وقت گولیاں مار کر قتل کردیا جب انہوں نے ایک اسرائیلی گاڑی پر فائرنگ کی۔

فوج نے ایک خودکار ہتھیار کی تصویر شائع کی ہے جس کے بارے میں کہا گیا ہے کہ اسے فلسطینیوں کے پاس سے قبضے میں لیا گیا ہے۔

فلسطینی وزارت صحت نے تصدیق کی ہے کہ طولکرم کے قریب اسرائیلی فوج کی فائرنگ سے دو فلسطینی شہید ہو گئے۔

اسرائیلی میڈیا نے اس سے قبل اطلاع دی تھی کہ شمالی مغربی کنارے کے شہر طولکرم کے قریب ایک آباد کار کو نشانہ بنانے والے حملے میں دو فلسطینی "مارے گئے" تھے۔

عبرانی اخبار’یدیعوت احرونوت‘ کے مطابق گولانی پٹرولنگ فوج نے فلسطینیوں کی کار کا پیچھا کیا اور فائرنگ کردی۔ گرفتاری کی کوشش کے دوران فریقین کے درمیان فائرنگ کا تبادلہ ہوا جس کے نتیجے میں دو فلسطینی مارے گئے۔

ایک عینی شاہد نے بتایا کہ اس نے طولکرم کے گاؤں شوفہ کے داخلی دروازے پر گولی چلنے کی آواز سنی۔

عینی شاہدین نے عرب عالمی خبر رساں ایجنسی کو مزید بتایا کہ گولی چلنے کی آواز آئی جس میں فوجیوں کو فلسطینیوں پر گولیاں چلاتے دیکھا۔

دوسری جانب اسرائیلی فوج اور فلسطینی عسکریت پسندوں کے درمیان طولکرم شہر اور اس کے کیمپ میں آج علی الصبح مسلح جھڑپیں ہوئیں۔ یہ جھڑپیں اس وقت شروع ہوئیں جب کیمپ سے ایک فلسطینی کو گرفتار کرلیا گیا۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں