اسرائیل غزہ میں جنگی جرائم کا ارتکاب کر رہا: فلسطینی وزیر اعظم

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
3 منٹس read

فلسطینی وزیر اعظم محمد اشتبہ نے کہا ہے کہ اسرائیل غزہ کا جامع محاصرہ کر رہا ہے اور جنگی جرائم کا ارتکاب کر رہا ہے۔ انہوں نے کہا کہ اسرائیلی محاصرے کی وجہ سے غزہ کے ہسپتال قبرستانوں میں تبدیل ہو رہے ہیں۔ فلسطینی وزیر اعظم نے جمعہ کے روز رام اللہ سے ایک تقریر میں مزید کہا کہ غزہ نسل کشی اور تباہی کا شکار علاقہ ہے۔

انہوں نے کہا کہ اسرائیل نے بین الاقوامی انسانی قانون کی خلاف ورزی کرتے ہوئے غزہ کا پانی منقطع کر دیا۔ اس نے وہاں کے رہائشیوں کو بے گھر کرنے کے مطالبے کے بعد جنوبی غزہ کی پٹی پر بمباری کی ہے۔

اسرائیل کی جانب سے غزہ کے باشندوں کو گھر خالی کرنے اور جنوب کی طرف جانے کے احکامات کے بارے میں بات کرتے ہوئے محمد اشتیہ نے کہا ہے کہ فلسطینی عوام اپنی سرزمین نہیں چھوڑیں گے۔ اسرائیل غزہ کی پٹی کی آبادی کو دنیا کے ملکوں میں تقسیم کرنے کی کوشش کر رہا ہے جو ناقابل قبول ہے۔

انہوں نے یہ بھی وضاحت کی کہ صدر محمود عباس نے امریکی وزیر خارجہ بلنکن کو یقین دہانی کرائی ہے کہ وہ غزہ کے باشندوں کو بے گھر کرنے کے کسی بھی منصوبے کو مسترد کر دیں گے۔ ہمارے لوگ قتل عام برداشت کرتے ہیں اور نقل مکانی کو قبول نہیں کرتے۔

مزید برآں فلسطینی وزیر اعظم نے کہا کہ ان کے لوگ قتل عام کو برداشت کرتے ہیں لیکن بے گھر ہونے اور پناہ گزینوں کو قبول نہیں کرتے۔ انہوں نے کہا کہ اسرائیل نے بے دفاع فلسطینیوں کو مارنے کے لیے آباد کاروں میں ہتھیار تقسیم کیے ہیں۔

انہوں نے یہ بھی کہا کہ وہ کسی بھی امداد کو غزہ کی پٹی میں داخل ہونے سے روکتا ہے، اس سے مغربی کنارے میں آبادکاری کے جرائم کو روکنے کا مطالبہ کرتا ہے۔

اشتبہ نے ایک سیاسی حل فراہم کرنے کی ضرورت پر زور دیا جس کے نتیجے میں قبضے کا خاتمہ ہو اور ایک فلسطینی ریاست قائم ہو، اس بات پر زور دیا کہ مسئلہ فلسطین کے حل میں ناکامی کا مطلب مشرق وسطیٰ میں تنازعات کا جاری رہنا ہے۔

انہوں نے اس بات پر زور دیا کہ فلسطینی عوام کو نوآبادیاتی قتل کی مشین کا سامنا ہے اور وہ بین الاقوامی دوہرے معیار کا شکار ہیں۔ انہوں نے عالمی برادری سے مسئلہ فلسطین کے منصفانہ حل کے ذریعے تنازعات کو ختم کرنے کا مطالبہ کیا۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں