اسرائیل نے غزہ کو غیر واضح علاقے میں تبدیل کر دیا : انروا

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
1 منٹ read

فلسطینی پناہ گزینوں کے لیے اقوام متحدہ کی ریلیف اینڈ ورکس ایجنسی (UNRWA) کے کمشنر جنرل فلپ لازارینی نے کہا ہے کہ اسرائیل نے سات اکتوبر سے جاری جنگ کے دوران غزہ کو ایک "غیر متعین" علاقے میں تبدیل کر دیا ہے۔

لازارینی نے سلامتی کونسل کے سامنے ایک تقریر میں مزید کہا کہ اسرائیل غزہ میں ایجنسی کی سرگرمیاں ختم کرنا چاہتا ہے۔ ایجنسی کی شمالی غزہ کی پٹی میں امداد بھیجنے کی درخواستوں کو مسترد کر دیا گیا ہے۔

کمشنر جنرل نے مزید کہا کہ سات اکتوبر سے اب تک ایجنسی کے 178 ملازمین ہلاک ہو چکے ہیں۔ 160 سے زیادہ ایجنسی کے ہیڈ کوارٹرز مکمل یا جزوی طور پر تباہ ہو چکے ہیں۔ انہوں نے کہا متعدد ممالک اب بھی ایجنسی کو اپنی فنڈنگ معطل کر رہے ہیں۔

انہوں نے خبردار کیا کہ ایجنسی کے فنڈنگ روکنے سے مالی استحکام کو نقصان پہنچ رہا ہے۔ ایجنسی کی سرگرمیاں معطل کرنے سے انسانی بحران مزید گہرا ہو جائے گا اور قحط میں تیزی آ جائے گی۔ کمشنر جنرل نے سلامتی کونسل کے ارکان پر زور دیا کہ وہ ایجنسی کے کردار کو برقرار رکھنے کے لیے کام کریں۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں