لبنان اور فرانسیسی قیادت کا حزب اللہ-اسرائیل جھڑپیں رکوانے کے لیے تبادلۂ خیال

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

فرانسیسی صدر ایمانوئل میکرون نے جمعہ کے روز پیرس میں لبنان کے وزیرِ اعظم نجیب میقاتی اور آرمی چیف جنرل جوزف عون سے ملاقات کی جس میں حزب اللہ اور اسرائیل کے درمیان سرحد پار لڑائی ختم کرنے اور لبنان میں سیاسی تعطل کو کم کرنے کے طریقوں پر بات چیت کی گئی۔

میقاتی کے دفتر سے ایک بیان میں کہا گیا ہے کہ انہوں نے میکرون کے ساتھ سرحد پار لڑائی ختم کرنے کی ایک فرانسیسی تجویز پر تبادلۂ خیال کیا جس میں لبنانی فوج کی حمایت میں اضافہ اور سرحد کے 10 کلومیٹر (چھے میل) کے اندر سے حزب اللہ کے مزاحمت کاروں کے انخلاء کا تصور دیا گیا ہے۔

بیان میں کہا گیا ہے کہ میقاتی نے "لبنان کے خلاف اسرائیلی جارحیت کو روکنے اور فوج کو اس کے امور مکمل طور پر انجام دینے کے لیے ساز و سامان اور مہارت کے ساتھ مدد فراہم کرنے" کے لیے میکرون کا شکریہ ادا کیا۔

ایران کی حمایت یافتہ حزب اللہ اور اسرائیلی فوج سات اکتوبر کو اسرائیل اور حماس کے درمیان جنگ شروع ہونے کے بعد سے لبنانی سرحد کے پار جھڑپوں میں مصروف ہیں جو 2006 میں ان کے درمیان ہونے والی جنگ کے بعد سے اب تک کی سنگین ترین دشمنی ہے۔

لڑائی سے کشیدگی میں مزید اضافے کے خطرے کے بارے میں تشویش کو تقویت ملی ہے۔

صدر میقاتی کے دفتر کے بیان میں کہا گیا ہے کہ میکرون اور میقاتی نے سابق لبنانی صدر میشل عون کے عہدہ چھوڑنے کے بعد 1-1 /2 سے زیادہ نئے صدر کے انتخاب کی ضرورت پر بھی تبادلۂ خیال کیا جس سے سیاسی جمود مزید گہرا ہو رہا ہے کیونکہ لبنان شدید مالی بحران کا شکار ہے۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں