.

پی آئی اے کا مسافر طیارہ برطانیہ میں جنگی جہازوں نے اتار لیا

برطانوی پولیس طیارے میں داخل، 2 افراد زیر حراست

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

برطانوی پولیس کا کہنا ہے کہ پاکستان کی قومی فضائی کمپنی [پی آئی اے] کے مسافر طیارے کو برطانوی فضائیہ کے حفاظتی حصار میں لندن کے سٹینسٹیڈ ہوائی اڈے پر اتارنے کے بعد اس میں سے دو افراد کو زیر حراست لیا ہے۔ ان افراد کو طیارے کو خطرے میں ڈالنے کے جرم میں حراست میں لے لیا۔ دونوں پاکستانی نژاد برطانوی شہری ہیں اور ان کی شناخت صفدر محمود طیب سبحانی کے طور پر کرائی گئی ہے۔

پی آئی اے کی پرواز نمبر پی کے 709 صوبہ پنجاب کے دارالحکومت لاہور سے مقامی وقت کے مطابق صبح ساڑھے نو بجے روانہ ہوا اور اسے مانچسٹر دوپہر کے دو بجے پہنچنا تھا۔ اس جہاز پر 308 مسافر سوار ہیں اور اسے لندن کے قریب واقع سٹینسٹیڈ کے ہوائی اڈے پر اتار کر اس کا معائنہ کیا جائے گا۔

ایسکس پولیس کے ترجمان نے بتایا کہ ’ایک طیارے پر ایک واقعہ ہوا ہے پولیس اور دوسری تنظیمیں اس پر کارروائی کر رہی ہیں۔‘

پی آئی اے کے ترجمان ذوالفقار بجرانی نے میڈیا کو بتایا کہ ’پی آئی اے کی پرواز 709 لاہور سے مقررہ وقت پر روانہ ہوئی تھی، اور اس نے تمام سکیورٹی چیک پورے کیے تھے۔ پرواز مانچسٹر ہوائی اڈے پر اترنے والی تھی لیکن دس منٹ پہلے ایئرٹریفک کنٹرول کو ایک کا ل موصول ہوئی جس کے بعد انھوں نے جہاز کا راستہ بدل کر اسے سٹینسٹیڈ کےہوائی اڈے پر بھیج دیا‘۔

ذوالفقار بجرانی نے مزید کہا کہ ’ممکنہ طور پر جہاز میں بم کی اطلاع ہے، لیکن اس کی تصدیق نہیں ہو سکی۔ جہاز میں 308 مسافر اور عملے کے 14 ارکان شامل ہیں۔ طیارے میں پاکستانی اور برطانوی شہری سفر کر رہے تھے‘۔

سٹینسٹیڈ ہوائی اڈے کو برطانیہ میں اور لندن میں ریلیف ہوائی اڈے کے طور پر استعمال کیا جاتا ہے جہاں غیر معمولی صورتحال میں ہوائی جہازوں کا رخ بدلا جاتا ہے اور اس صورت میں بھی اسے پی آئی اے کی پرواز کے اترنے کے لیے استعمال کیا گیا۔