ہیومن ٹریفیکنگ سے متعلق شکایات کے لیے پاکستان میں پہلی ہاٹ لائن سروس کا آغاز

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
1 منٹ read

انسانی سمگلنگ کی شکایت کے اندراج کے لیے ایف آئی اے نے ہاٹ لائن کا آغاز کر دیا ہے۔ ایف آئی اے کے ایک سینیئر اہلکار کا کہنا ہے کہ انسانی سمگلنگ کی شکایات کا فوری جواب دینے میں ہاٹ لائن سے مدد ملے گی۔

پاکستان نے اس سال جون سے انسانی سمگلروں کے خلاف کارروائیوں کو تیز کیا تھا۔ جب یونان میں 300 پاکستانی موت کے منہ میں چلے گئے تھے۔

واضح رہے ہر سال ہزاروں نوجوان پاکستانی یورپ میں غیرقانونی طور پر داخل ہونے کے لیے خطروں سے بھرا ہوا سفر کرتے ہیں۔ 'ہیومن ٹریفیکنگ' غریب پاکستانیوں کو بہتر زندگی اور بہتر روزگار کے خواب دکھاتے ہوئے ان استحصال کرتے ہیں اور ان کی زندگیوں کو خطرے میں ڈالتے ہیں۔

پاکستانی خبر رساں ادارے نے ایک رپورٹ میں کہا ہے کہ ایف آئی اے نے انسانی سمگلنگ کی روک تھام کے لیے پہلی بار ہاٹ لائن کا آغاز کر دیا ہے۔

رپورٹ میں مزید کہا گیا ہے کہ آسٹریلوی ہائی کمیشن نے ہاٹ لائن کے لیے مالی معاونت آئی ایل او کے ذریعے فراہم کی تھی۔

ایف آئی کے ایڈیشنل ڈائریکٹر نے ہاٹ لائن کے آغاز کے سلسلے میں ہونے والی تقریب کے موقع پر کہا کہ یہ اپنی نوعیت کا پہلا اور اچھا آغاز ہے۔ جو 'ہیومن ٹریفیکنگ' سے متعلق شکایات کے ازالے کے لیے بنا ہے۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں