.

سعودی دوشیزہ کے ہاتھوں طائف کی چٹانیں نگار خانے کا منظر پیش کرنے لگیں

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

فنون لطیفہ کی ماہر سعودی فنکار دوشیزہ نے مملکت کے مغربی علاقے طائف کی چٹانوں پر اپنے فن کے جوہر دکھائے۔ سعودی عرب کی فائن آرٹ کی ماہر مہا الکافی جو طائف میں کلچرل اور آرٹ فیڈریشن کی رکن ہیں۔

گذشتہ دو ماہ کے دوران طائف کی پہاڑی چٹانوں‌ پر آرٹ کے نمونے اور خاکے تیار کرتی رہی ہیں۔ دو ماہ کے دوران انھوں نے طائف میں سیاحت کے لیے آنے والے سیاحوں کی غیر معمولی توجہ حاصل کی۔ وہ روزانہ کی بنیاد پران پہاڑیوں میں گھومتی اور چٹانوں پر خاکے تیار کرتی۔

العربیہ ڈاٹ نیٹ سے بات کرتے ہوئے الکافی نے بتایا کہ وہ 23 سال سے فائن آرٹ کے میدان میں اپنی مہارت کے جوہر دکھا رہی ہیں۔

انھوں نے بتایا کہ طائف کے پہاڑوں پر انھوں نے پھولوں، اسلامی تاریخی علامات، پتوں، اسلامی فن تعمیر کے اظہار پر مبنی خاکوں سے انواع واقسام کی پینٹنگز بنائیں۔ اس کے علاوہ مختلف جانداروں جن میں عسیری کی بلی اور کئی دوسرے جانداروں کی تصاویر بھی شامل ہیں۔ ان پہاڑوں پر اس کے تیار کردہ خاکے مملکت میں پائی جانے والی مختلف ثقافتوں کا خوبصورت اظہار ہے۔

مہا الکافی نے کہا کہ اس نے پہاڑی چٹانوں پر نقوش اور خاکہ سازی کا آغاز القصیم گورنری سے کیا۔ اس کے بعد اس کا یہ سفر الدوامی اور الطائف میں جاری رہا۔ آنے والے ہفتوں میں وہ اپنے فن کا اظہار جدہ، الریاض اور دوسرے علاقوں میں پہاڑوں پر کریں گی۔

ایک سوال کے جواب میں مہا الکافی کا کہنا تھا کہ اس نے بچپن ہی میں کاپیوں اور قرطاس پر خاکے بنانا شروع کر دیئے تھے۔ یہی وجہ ہے کہ میں نے بہت چھوٹی عمر میں اس فن میں اپنا ہاتھ سیدھا کرلیا۔ میں نے‌اپنے تیار کردہ فن پارے مقامی سطح پرہونے والی آرٹ نمائشوں میں بھی پیش کرنا شروع کیے جس سے میری حوصلہ افزائی ہوئی۔