.

ابوظبی کے حکمراں خاندان کے بچّے سائنوفارم ویکسین کے کم عمروں پرٹرائل میں شامل

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

ابوظبی کے حکمران خاندان کے بعض بچّے متحدہ عرب امارات میں چین کی ساختہ کووِڈ-19 کی ویکسین سائنوفارم کے ٹرائل میں شامل ہیں اور انھیں بھی اس ویکسین کے انجیکشن لگائے گئے ہیں۔

ابوظبی کے میڈیا دفتر کے مطابق یواے ای میں تین سے 17 سال کی عمر کے قریباً 900 بچّوں کو ویکسین لگائی جارہی ہے۔سائنو فارم کی ویکسین لگنے کے بعد ان بچّوں کی قوتِ مدافعت کا جائزہ لیاجائے گا اور پھر ان کے نتائج کی بنیاد پر مستقبل قریب میں یو اے ای میں بچّوں کو یہ ویکسین لگانے کی منظوری دی جائے گی۔

دبئی میڈیا دفتر کی ایک ٹویٹ کے مطابق ابوظبی کے ولی عہد اور یواے ای کے عملی حکمراں شیخ محمد بن زاید آل نہیان کے بیٹے شیخ طیب بن محمد اپنے بچّوں اور بھتیجے بھتیجیوں کے ساتھ ویکسین کے نتیجے میں قوتِ مدافعت کی جانچ کے لیے اس مطالعہ میں حصہ لے رہے ہیں۔

یو اے ای نے مئی میں 12 سے 15 سال کی عمر کے بچوں کے لیے فائزراور بائیواین ٹیک کی ویکسین کے ہنگامی استعمال کی منظوری دی تھی۔یو اے ای کے وفاق میں شامل دوسری بڑی امارت دبئی نے اس عمر کے گروپ میں شامل بچّوں کو اسی ماہ یہ ویکسین لگانا شروع کردی ہے۔

یو اے ای میں پہلے ہی چین کی سرکاری دوا ساز فرم سائنوفارم کی ساختہ ویکسین کی تیسرے مرحلے میں کلینیکی جانچ کی جاچکی ہے اوراس نے سائنوفارم اور ابوظبی سے تعلق رکھنے والی ٹیکنالوجی کمپنی گروپ 42 کے اشتراک سے اس کی ملک میں تیاری شروع کردی ہے۔