سعودی تاریخی شہر حائل جہاں کی سیاحت کیلئے خلیجی افراد دور دراز کا سفر کرتے ہیں

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
3 منٹس read

خلیجی ممالک کے شہری سعودی عرب کے شمال مغرب میں واقع تاریخی شہر حائل تک پہنچنے کیلئے دور دراز کا سفر بھی گوارا کر لیتے ہیں۔ دراصل خلیجی ملکوں کے افراد متنوع سیاحتی علاقوں اور اس علاقے میں موجود ورثے کے ذخیرے سے لطف اندوز ہونے کیلئے یہاں آتے ہیں۔ اس سال بھی خلیجی ملکوں کے افراد اس شہر کا رخ کر چکے ہیں۔

سالم، اجلان اور مطر المنصوری جو اولوں کے موسم کی سرگرمیوں کے دوران اپنے دورے کے دوران متحدہ عرب امارات سے آئے تھے نے کہا "ہم نے حائل شہر تک پہنچنے کے لیے 1500 کلومیٹر سے زیادہ کا سفر طے کیا ۔ ہم نے حائل کا دورہ کرنے کا پہلے سے منصوبہ بنایا تھا۔ ہم پہلی مرتبہ ایسے سفر پر نکلیں ہیں۔ ہم اس خطے کے قدرتی اور پرکشش سیاحتی علاقوں کی وجہ سے حائل کا دورہ کرنا چاہتے تھے۔

انہوں نے مزید کہا کہ ہم نے سیاحتی گاؤں عقدہ، سمرا کے پہاڑ، قدیم قلعہ عیرف ، آثار قدیمہ کا گاؤں توران کی سیر کرلی ہے۔ ہم خطے میں اپنا سفر مزید جاری رکھیں گے کیونکہ حائل سعودی عرب کے ابتدائی شہروں میں سے ایک ہے۔ سعودی عرب میں خوبصورت قدرتی سیاحتی مقامات ہیں۔ پہاڑوں، میدانوں، وادیوں اور معتدل آب و ہوا کے درمیان متنوع خطے ہیں۔ یہ مقامات سیاحوں کو اپنی طرف متوجہ کرتے ہیں۔

عمان سے آنے والے علی اور محمد الجعفری حائل کے فیسٹول سیزن 2022 کے دوران المغواۃ پارک دیکھنے کیلئے یہاں آئے تھے۔ دونوں نے بتایا کہ وہ ماحول اور موجودہ دور میں پیش کی جانے والی مختلف سرگرمیوں سے لطف اندوز ہونے کے خواہشمند تھے۔

علی الجعفری نے کہا کہ موسم سرما میں میں سعودی شہروں خاص طور پر شمال میں واقع حائل، العلا اور الجوف جیسے علاقوں کا دورہ کرنے کا خواہشمند تھا۔ تاہم میں نے اولوں کی وجہ سے حائل کا دورہ کرنے کا فیصلہ کرلیا۔ اولوں کے متعلق ہم نے سوشل نیٹ ورکنگ ویب سائٹس سے سنا تھا، میں جب یہاں پہنچا تو یہاں کی متنوع سرگرمیاں دیکھ کر میں حیران رہ گیا اور اس علاقے کو جیسا سنا تھا اس سے بھی بڑھ کر پایا ہے۔

حائل سیزن کا دوسرا ایڈیشن حال ہی میں "آپ کو فخر ہے" کے نعرے کے تحت شروع کیا گیا تھا اور یہ 23 دسمبر تک جاری رہے گا۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں