فیفاعالمی کپ:قطرمیں ٹورنامنٹ کی تاریخ میں سب سے زیادہ تعدادمیں شائقین کی شرکت

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
3 منٹس read

قطرمیں جاری فیفاعالمی کپ میں فٹ بال ٹورنامنٹ کی تاریخ میں اب تک کی سب سے زیادہ حاضری ریکارڈ کی گئی ہےاور مجموعی طور پرساڑھے24 لاکھ تماشائی میچوں کودیکھنے کے لیے آچکے ہیں۔

فیفا کی اپنے قطر 2022 پورٹل پرشائع ہونے والی ایک رپورٹ میں بتایاگیا ہے کہ 13دن اور 48 میچوں کے بعد مشرقِ اوسط کے خطے میں ہونے والے ٹورنامنٹ کے پہلے ایڈیشن میں ریکارڈ ٹرن آؤٹ دیکھنے میں آیا ہے۔اس میں اوسطاً 96 فی صد شائقین اسٹیڈیم کی کرسیوں پرموجود پائے گئے ہیں۔روس میں 2018ء کے عالمی کپ کے دوران میں کل تماشائیوں کی تعداد21 لاکھ 70 ہزارریکارڈ کی گئی تھی۔

سنہ 1994ء کے فٹ بال عالمی کپ کے فائنل کے بعد ٹورنامنٹ کی تاریخ میں اب تک کی شائقین کی سب سے زیادہ حاضری قطرکے لوسیل اسٹیڈیم میں دیکھی گئی جب 88،966 شائقین نے ارجنٹائن بمقابلہ میکسیکو کا گروپ میچ 26 نومبرکودیکھا تھا۔

عالمی کپ کے اس ایڈیشن میں ایک اوردلچسپ عنصر یہ ہے کہ تمام براعظموں کی ٹیموں نے پہلی مرتبہ عالمی ٹورنامنٹ کے دوسرے مرحلے یعنی ناک آؤٹ 16 تک رسائی حاصل کی ہے۔

ایشیابحرالکاہل کے خطے سے تعلق رکھنے والی تین ٹیمیں – آسٹریلیا ، جاپان اور جنوبی کوریا –پہلی مرتبہ ناک آؤٹ مرحلے میں پہنچی ہیں۔ یہ خود ایک ریکارڈ ہے۔اس سے پہلے سنہ2002 اور 2010 میں اس خطے کی صرف دوٹیمیں اس مرحلے میں پہنچی تھیں۔یہ بات بھی قابل ذکر ہے کہ دو افریقی ٹیمیں سینی گال اورمراکش بھی ناک آؤٹ مرحلے میں پہنچ گئی ہیں۔ آخری مرتبہ 2014 میں براعظم افریقا کی دوٹیمیں گروپ سولہ کے مرحلے میں پہنچنے میں کامیاب ہوئی تھیں۔

فیفا کے چیف آف گلوبل فٹ بال ڈیولپمنٹ آرسین وینجر نے اتوارکوایک بیان میں کہا کہ ’’گروپ مرحلے کے نتائج سے ظاہرہوتا ہے،زیادہ سے زیادہ ممالک نے اعلیٰ سطح پر مقابلہ کرنے کے لیے کس حد تک کامیابی حاصل کی ہے‘‘۔

انھوں نے کہا کہ ’’یہ مخالف ٹیموں کی بہترتیاری اور تجزیہ کانتیجہ ہے،جو ٹیکنالوجی تک زیادہ مساوی رسائی کی عکاسی بھی ہے۔یہ فیفا کی عالمی سطح پر فٹ بال کی مسابقت کو بڑھانے کی کوششوں کے عین مطابق ہے‘‘۔

یہ بات خاص طورپرقابلِ ذکر ہے کہ پرتگیزی فٹ بال لیجنڈ کرسٹیانورونالڈو نے اس ٹورنامنٹ میں ایک منفردریکارڈ قائم کیا ہے اور وہ ورلڈ کپ کے پانچ ایڈیشنوں میں اسکور کرنے والے تاریخ کے پہلے کھلاڑی بن گئے ہیں۔

اسٹیفنی فریپارٹ نے بھی تاریخ رقم کی ہے اور وہ فیفا ورلڈکپ کے کسی میچ میں امپائرنگ کرنے والی پہلی خاتون بن گئی ہیں۔انھوں نے نیوزابیک اورکیرن دیازمدینہ کے ساتھ مل کرمیچ کا چارج سنبھالاتھا۔اس طرح وہ فیفاعالمی کپ کے میچ میں ریفری بننے والی پہلی تین خواتیں تھیں۔

قطرمیں فٹ بال عالمی کپ ٹورنامنٹ کاآغاز20 نومبرکو ہوا تھا اور یہ 18 دسمبر تک جاری رہے گا۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں

  • مطالعہ موڈ چلائیں
    100% Font Size