سعودی عرب کا نیوم تلفاز 11 اسٹوڈیو کے اشتراک سے 9 شو، 3 فلمیں تیار کرے گا

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
3 منٹس read

سعودی عرب میں 500 بلین ڈالر سرمائے سے بننے والے مستقبل کے شہر نیوم اور مشرق وسطیٰ میں قائم اسٹوڈیو تلفاز 11 نے اگلے تین سالوں میں نو ٹی وی اور فلمی پروجیکٹس کے لیے ایک نئے معاہدے کا اعلان کیا ہے۔
دو فیچر فلمیں اور ایک سیریز جو فی الحال زیر تکمیل ہیں اس معاہدے کا حصہ ہیں۔

تلفاز11 کی تازہ ترین تھیٹر فیچر فلم ’ستر‘ اب تک کی سب سے زیادہ کمائی کرنے والی سعودی فلم بن گئی ہے۔ حالیہ دنوں اسی طرح کی شاندار کامیابیوں کے بعد یہ مشرق وسطی کی تفریحی انڈسٹری میں بڑا نام بن چکا ہے۔

پروڈکشنز کے علاوہ، تلفاز 11 اس سال نیوم کے میڈیا ہب میں دفاتر کھولے گا ، تلفاز کے اس سے قبل ریاض اور دبئی میں دفاتر موجود ہیں۔

نیوم میں میڈیا انڈسٹریز، انٹرٹینمنٹ اور کلچر کے مینیجنگ ڈائریکٹر وین بورگ نے کہا: "ہمارا مشن نیوم میں ایک نیا عالمی معیار کا میڈیا ہب بنانا ہے، جو خطے کی تفریحی صنعت کو عالمی سطح پر مقابلہ کرنے اور کامیاب ہونے میں مدد فراہم کرے۔"

تلفاز کے سی ای او اور شریک بانی، علاء فادن نے کہا کہ، " ہمارے لیے نیوم کے اگلی نسل کے میڈیا اور تفریحی ماحول کے مرکز میں ہونے سے بڑا کوئی اعزاز نہیں۔"

"تلفاز نے خطے میں پہلی نیٹ فلکس شراکت شروع کرنے سے لے ہمیشہ جدت کے لیے مسلسل کام کیا ہے اور نیوم کے ساتھ یہ نئی شراکت اس کوشش میں ایک اور سنگ میل ہے۔"

نیوم میں پچھلے 18 مہینوں میں 30 بڑی پروڈکشنز کی شوٹنگ کی گئی ہے۔ جن میں معروف ڈاائریکٹر روپرٹ وائٹ کی 'ڈیزرٹ واریئر' شامل ہے، جس میں انتھونی میکی اور سر بین کنگسلے اداکار تھے۔

معروف اداکار شاہ رخ خان کی راجکمار ہیرانی کی ہدایت کاری میں بننے والی فلم 'ڈنکی' پہلی بالی ووڈ فلم تھی جو نیوم میں بنی۔

مقامی طور پر بننے والی فلموں میں مشہور سعودی فیچر فلم ’بین الرمال‘(ود ان سینڈز) جس کی ہدایت کاری محمد العطاوي نے کی اور پہلے علاقائی ریئلٹی ٹی وی شو 'ملین ڈالر آئی لینڈ کی میزبانی بھی نیوم نے کی۔

اور خطے کے سب سے بڑے بجٹ والے ٹیلی ویژن شو، رائز آف دی وِچز کے علاوہ، ایم بی سی کی "غیر معمولی" سیریز کی شوٹنگ اگلے جولائی میں شروع ہونے والی ہے، جو 200 اقساط پر مشتمل ہے۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں