’’ روڈ ٹو مکہ‘‘ میں کوڈنگ، حاجیوں کا سامان رہائش گاہوں تک پہنچانے کا محفوظ طریقہ

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

’’ روڈ ٹو مکہ‘‘ میں کوڈنگ، حاجیوں کا سامان رہائش گاہوں تک پہنچانے کا محفوظ طریقہ

سعودی عرب نے اس سال پہلی مرتبہ حجاج کرام کے لیے ’’ روڈ ٹو مکہ‘‘ اقدام شروع کیا ہے۔ اس اقدام کے تحت پاکستان سمیت 7 ملکوں کو شامل کیا گیا ہے۔ اس اقدام کے تحت ایک بڑی سہولت تو یہ دی جارہی ہے کہ ان ملکوں کے اپنے ایئرپورٹس پر ہی سعودی عرب میں داخلے کے طریقہ کار کی ضروریات کو پورا کرلیا جاتا ہے۔ روڈ ٹو مکہ اقدام کی ایک سہولت کوڈنگ سروس ہے۔ یہ سہولت ضیوف الرحمن کے سامان کو یقینی طور پر اور حفاظت کے ساتھ ان کی رہائش گاہوں تک پہنچانے میں زبردست کردار ادا کر رہی ہے۔

یہ سروس پاکستانی عازمین حج کو اپنے ملک میں اپنے سامان کو ترتیب دینے کے قابل بناتی ہے تاکہ یہ یقینی بنایا جا سکے کہ یہ سامان مکہ مکرمہ اور مدینہ منورہ میں ان کی رہائش گاہوں تک پہنچ جائے گا۔ حجاج کے سامان پر فلائٹ ڈیٹا اور معلومات پر مشتمل سٹیکر لگا دیا جاتا ہے۔ حجاج کرام کے پاسپورٹ کے سرورق پر ایک سٹیکر کے علاوہ ڈیٹا اور رہائش کے مقامات کی معلومات بھی درج ہوتی ہے۔ عازم حج کو ایک کارڈ دیا جاتا ہے جس میں اس کے سامان کی ساری معلومات درج ہوتی ہے۔

ایک خصوصی ٹیم وزارت حج و عمرہ کی نگرانی میں کوڈنگ سروس پر کام کر رہی ہے۔ یہ ایک لچکدار اور درست جہت کی اعلیٰ اور پیشہ ورانہ مہارت پر مبنی سہولت ہے۔ جدہ کے کنگ عبدالعزیز انٹرنیشنل ایئرپورٹ پر ایک اور ٹیم شہزادہ محمد بن عبدالعزیز انٹرنیشنل ایئرپورٹ پر کام کر رہی ہے۔ مدینہ کے ایئرپورٹ پر سامان وصول کیا جاتا اور اسے ہر حاجی کی رہائش گاہ تک پہنچادیا جاتا ہے۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں