امریکی بحری جہازوں کے لیے خطرہ، کیا حزب اللہ کے پاس روسی ساختہ یخونت میزائل ہیں؟

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
3 منٹس read

ایک طرف امریکہ مشرق وسطیٰ میں اپنے زیادہ جنگی جہاز اور طیارہ بردار بحری جہاز بھیج رہا ہے تو دوسری طرف حزب اللہ کے ہتھیاروں کے بارے میں مغربی خدشات اور ان ہتھیاروں سے امریکی بحری جہازوں کو خطراات لاحق ہونے کے امکانات بھی بڑھتے جارہے ہیں۔

خاص طور پر ایرانی حمایت یافتہ حزب اللہ کے پاس ہتھیاروں میں طاقتور روسی یخونت کلاس اینٹی شپ میزائل بھی موجود ہیں۔ یہ میزائل کسی بھی علاقائی جنگ کے سنگین خطرات کی طرف اشارہ کر رہے ہیں۔ تین موجودہ اور ایک سابق امریکی عہدیداروں نے انکشاف کیا ہے کہ حزب اللہ نے ہتھیاروں کی ایک بڑی صف تیار کی ہے جس میں اینٹی شپ میزائل بھی شامل ہیں۔

امریکی آبدوز
امریکی آبدوز

ایک عہدیدار نے بتایا کہ یہ واضح ہے کہ ہم اس پر بہت توجہ دے رہے ہیں، ہم ان ہتھیاروں کی صلاحیتوں کو بہت سنجیدگی سے لیتے ہیں۔ عہدیدار نے براہ راست یخونت میزائل کی حزب اللہ کے پاس موجودگی یا عدم موجودگی کے متعلق بات نہیں کی۔ تاہم تینوں عہدیداروں نے وضاحت کی کہ حال ہی میں خطے میں تعینات امریکی بحری فوج میں میزائل شکن دفاع موجود ہے۔

دو دیگر ذرائع نے اس بات کی تصدیق کی ہے کہ حزب اللہ نے درحقیقت یہ ہتھیار شام سے حاصل کیا تھا جب وہ وہاں طویل عرصے سے شامی صدر بشار الاسد کی حمایت میں لڑ رہے تھے۔

دوسری جانب روسی وزارت دفاع نے اس پر تبصرہ کرنے سے انکار کردیا۔ کریملن کے ترجمان دمتری پیسکوو نے امریکی ذرائع سے معلومات کے بارے میں پوچھے گئے سوال کے جواب میں صرف اتنا کہا کہ اس خبر کی بالکل تصدیق نہیں ہوئی ہے اور ہم نہیں جانتے کہ یہ سچ ہے یا نہیں۔

واشنگٹن میں قائم سینٹر فار سٹریٹجک اینڈ انٹرنیشنل سٹڈیز (سی ایس آئی ایس) کی جانب سے جاری رپورٹ کے مطابق زمین سے مار کرنے والا یخونت میزائل 10 سے 15 میٹر کی کم اونچائی پر اپنے ہدف تک پہنچتا ہے۔ کم اونچائی کا مقصد یہ ہوتا ہے کہ پتہ لگانے سے بچا جا سکے۔یخونت میزائل کو فضا اور آبدوزوں سے بھی لانچ کیا جا سکتا ہے۔

یہ میزائل ’’ پی 800 اونکیس‘‘ میزائل کی ایک قسم ہے۔ اسے سب سے پہلے 1983 میں تیار کیا گیا۔ 1999 میں اسے روسی دفاعی کمپنی نے تیار کیا تھا۔ 8 اکتوبر سے یعنی غزہ کی پٹی کے ارد گرد کی بستیوں اور ٹھکانوں پر حماس کی جانب سے کیے گئے اچانک حملے کے ایک دن بعد سے حزب اللہ جنوبی لبنان کی سرحد پر اسرائیلی افواج کے ساتھ فائرنگ کا تبادلہ کر رہی ہے۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں