اسرائیل کا غزہ تلے حماس کی سرنگوں تک جانے والی 800 شافٹس دریافت کا دعویٰ

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size

اسرائیلی فورسز نے غزہ میں 27 اکتوبر سے شروع ہونے والی زمینی کارروائی کے بعد سے حماس کی زیر زمین سرنگوں اور بنکروں کے وسیع زیرِ زمین نیٹ ورک کی طرف جانے والی 800 شافٹ دریافت کرنے اور ان میں سے نصف سے زیادہ کو تباہ کرنے کا دعویٰ کیا ہے۔

خبر ایجنسی ’رائٹرز‘ کی رپورٹ کے مطابق فلسطینی گروپ نے غزہ کی پٹی میں اب آٹھ ہفتے پرانے تنازع سے پہلے کہا تھا کہ اس کے پاس حفاظت اور آپریشنل اڈوں کے طور پر کام کرنے کے لیے سیکڑوں کلومیٹر لمبی سرنگیں ہیں، جن کا موازنہ نیویارک کے سب وے سسٹم کے سائز کے نیٹ ورک سے کیا جاسکتا ہے۔

اس نے انہیں گولہ بارود اور فوج کے انجینئرز کے ساتھ میپنگ روبوٹ اور ایکسپلوڈنگ جیل کا استعمال کرتے ہوئے اسرائیلی فضائی حملوں کا سب سے بڑا ہدف بنا دیا ہے جسے راستوں میں ڈالا جا سکتا ہے۔

اسرائیلی فوج نے اتوار کو ایک بیان میں کہا کہ ’سرنگ کی شافٹس شہری علاقوں میں واقع تھی، جن میں سے اکثر شہری عمارتوں اور ڈھانچے جیسا کہ اسکول، کنڈرگارٹن، مساجد اور کھیل کے میدانوں کے قریب یا اندر تھیں۔‘

فوج نے بتایا کہ دریافت ہونے والی تقریباً 800 شافٹس میں سے 500 کو ’دھماکے اور سیل کرنے‘ سمیت مختلف آپریشنل طریقوں سے تباہ کردیا گیا۔ مزید کہا گیا کہ سرنگ کے ’کئی میل‘ مرکزی راستوں کو بھی تباہ کر دیا گیا ہے۔

مقبول خبریں اہم خبریں