مشرق وسطیٰ

غزہ جنگ فوجی ٹیکنالوجی کی فروخت بڑھا کر اسرائیلی معیشت کو مدد دے گی: وزیر

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
3 منٹس read

اسرائیل کے وزیرِ اقتصادیات کا کہنا ہے کہ غزہ میں حماس کے خلاف جنگ سے اسرائیل کی معیشت کو جنگ کے بعد بحال کرنے میں مدد ملے گی۔ اس کی ایک وجہ یہ ہے کہ جزوی طور پر جنگ کا تازہ تجربہ فوجی ٹیکنالوجی کی فروخت بڑھا دے گا۔

ابوظہبی میں ورلڈ ٹریڈ آرگنائزیشن کی وزارتی کانفرنس کے موقع پر منگل کے روز صحافیوں سے بات کرتے ہوئے اسرائیل کے وزیر اقتصادیات و صنعت نیر برکت نے کہا کہ اسرائیل پر جنگ کے ملکی اثرات "ایسے نہیں ہیں کہ اسرائیل درمیانی سے طویل مدت تک برداشت نہ کر سکے۔"

انہوں نے جنگ کے دورانیے سے قطع نظر کل لاگت کا تخمینہ 150-200 بلین شیکلز یا تقریباً 50 بلین ڈالر لگایا۔

برکت بنجمن نیتن یاہو کی لیکود پارٹی کے رکن ہیں اور بڑے پیمانے پر ان کے ممکنہ جانشین کے طور پر دیکھے جاتے ہیں۔ انہوں نے کہا، "آپ کو ہمیشہ اس بات کا احساس ہونا چاہئے کہ اسرائیل کی جنگوں میں ہماری معیشت میں کمی آئی تھی لیکن اس کے فوراً بعد ہمارے پاس جدت طرازی کی بہت بڑی تیزی تھی۔ اور تشدد کے اس دور میں اسرائیل جو علم اور تجربہ جمع کر رہا ہے، اس کا کوئی ثانی نہیں۔"

فلسطینی حکام کہتے ہیں کہ سات اکتوبر کو حماس کے اسرائیل پر مہلک حملے کے نتیجے میں اسرائیل کی جوابی کارروائی میں غزہ میں تقریباً 30,000 افراد ہلاک ہو چکے ہیں۔

برکت نے کہا کہ اسرائیل نے ڈبلیو ٹی او کے چار روزہ اجلاس کے دوران بہت ساری ملاقاتیں کیں جس میں اس کی ہائی ٹیک معیشت اور مختلف شعبوں میں کاروباری افراد کی نمایاں تعداد کا حوالہ دے کر انہوں نے اسے اسرائیل کا "مسابقتی فائدہ" قرار دیا۔

ان شعبوں میں سے ایک وطن کی سلامتی ہے۔ برکت نے کہا، "خاص طور پر اس جنگ کے بعد مجھے لگتا ہے کہ ہم شاید کئی اقدامات کی قیادت کر رہے ہوں گے کہ اگلی نسل کی جنگ کیسی ہو گی۔"

اس سوال پر کہ کیا دلچسپی رکھنے والوں میں عرب ممالک بھی شامل ہیں جن کے اسرائیل کے ساتھ تعلقات حماس کے خلاف چار ماہ سے زائد عرصے سے جاری جنگ کی وجہ سے تناؤ کا شکار ہیں، انہوں نے کہا کہ دنیا بھر سے اس میں دلچسپی ہے۔

"کوئی بھی شخص جو یہ سوچتا ہے کہ [انہیں] ایران کی حکومت سے خطرہ ہے یا خطرہ ہے تو وہ بہتر طور پر یہ سمجھنے کے لیے ہم سے رابطہ کریں کہ ہم نے کیا سیکھا ہے اور کیا حل اور سیکورٹی کے چیلنجز ہیں۔ اور ہم سب سے آگے ہیں۔"

اسرائیل کے مرکزی ادارۂ شماریات کے ابتدائی تخمینے کے مطابق اس کی 500 بلین ڈالر کی معیشت 2023 کی چوتھی سہ ماہی میں گذشتہ تین ماہ کے مقابلے میں سالانہ 19.4 فیصد کم ہو گئی۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں