.

ولید بن طلال نے دو ارب سعودی ریال مالیت کا ہوائی جہاز خرید لیا

تین منزلہ 'اڑن محل' کے اندر لفٹ نصب ہو گی

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
سعودی عرب کے شاہی خاندان کے کھرب پتی شہزادہ ولید بن طلال دنیا کے پہلے شخص ہیں جو ذاتی سفر کے لیے ایک بڑے ہوائی جہاز کا استعمال کر رہے ہیں۔ ان کے نئے ملکیتی طیارے "سپر جمبو" ایئر بس A 380 کی کل مالیت پانچ سو ملین ڈالرز سے زیادہ ہے۔

العربیہ ٹی وی کے مطابق شہزادہ ولید بن طلال بن عبدالعزیز کے پاس موجود ذاتی ملکیت میں زیر استعمال یہ ہوائی جہاز 2012ء میں دنیا کے دیگر ذاتی جہاز رکھنے والوں کے طیاروں میں سب سے زیادہ گراں قیمت ہے۔

رپورٹ کے مطابق ویسے تو اس طرح کے ایئر بس میں کم سے کم 600 مسافر سفر کر سکتے ہیں تاہم شہزادہ ولید بن طلال نے اپنے ذاتی مقاصد کے لیے اس میں کچھ مخصوص تبدیلیاں کرائی ہیں۔ اس میں ایک آرام کمرہ بنایا گیا ہے جس میں شہزادے کے پچیس معاونین قیام کر سکیں گے۔

ایئربس کمپنی کی مشرق وسطی شاخ کے چیئرمین حبیب فقیہ نے بتایا کہ 'اڑن محل' کے نام سے موسوم خصوصی جہاز میں میٹنگ روم، بینکویئٹ ہال، پانچ شاہی کمرے، جائے نماز [جہاں دوران پرواز قبلے کی سمت بتانے کے خصوصی الیکٹرانک آلات نصب ہیں]۔ جہاز کی تین منزلوں تک فوری رسائی کے لئے لفٹ بھی لگائی گئی ہے۔ اس میں رولز رائس کار کے لئے پارکنگ کی بھی مخصوص کی گئی ہے۔

شہزادہ ولید بن طلال نے جدید ترین سہولیات سے آراستہ "سپر جمبو" طیارے کی تیاری کا آرڈر کمپنی کو سنہ 2009ء میں دیا گیا تھا۔ عمومی طور پر اس طرح کے طیاروں کی قیمت تین سو ملین ڈالرز کے لگ بھگ ہوتی ہے، تاہم شہزادہ ولید بن طلال کے طیارے کو خصوصی طور پر تیار کیا گیا ہے۔

"سپر جمبو" ایئر بس دنیا بھر کے مسافر بردار طیاروں میں سب سے بڑا جہاز سمجھا جاتا ہے۔ دو منزلہ اس طیارے میں بیک وقت چار انجمن کام کرتے ہیں، جو طیارے کے حد رفتار میں کسی بھی دوسرے طیارے کی نسبت زیادہ تیز رفتاری کا باعث بنتے ہیں۔ سپر جمبو A 380 ایئر بس ایک طرف سے 15200 کلومیٹر تک پرواز کرنے کی صلاحیت رکھتا ہے۔ یعنی یہ چین میں ہانگ کانگ سے امریکی ریاست پوسٹن تک ایک ہی مرحلے میں سفر مکمل کر سکتا ہے۔ فی گھنٹہ اس کی رفتار نو سو کلو میٹر ہے۔

ایئربس A380 طرز کا یہ پہلا جہاز ہے جو سعودی شہزادے کو فروخت کیا گیا ہے۔ مستقبل میں ایئربس کو مزید آڈر ملنے کی توقع ہے تاہم ان آڈرز کی تیاری کا کام شہزادہ ولید بن طلال کو جہاز کی ڈیلیوری کے بعد شروع ہو گا۔

کمپنی کے سپر جمبو طیاروں کی پیداوار سنہ 2005ء میں شروع ہوئی تھی اور اس کے پہلے مسافر طیارے نے 27 اپریل 2005ء کو جنوبی فرانس کے شہر ٹولوز کے ہوائی اڈے سے اڑان بھری تھی۔