.

سعودی عرب: بشار الاسد کے لیے''فنڈز ریزنگ'' پر شامی ڈاکٹر ڈی پورٹ

دھوکہ دہی سے شامی اپوزیشن کے نام پر رقم بٹو رہے تھے

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

سعودی حکومت نے متعدد اییسے شامی ڈاکٹروں کو ملک سے نکال دیا ہے جن کے بارے تحقیقات کے بعد یہ ثابت ہو گیا تھا کہ وہ لوگوں کو دھوکہ دیتے ہوئے بشارالاسد رجیم کے لیے فنڈز جمع کرنے اور سعودی سر زمین پر سیاسی سرگرمیوں میں ملوث تھے۔

واضح رہے سعودی عرب، شام میں عوامی بغاوت کا حامی ہے اور بشارالاسد کے خلاف بین الاقومی مداخلت پر زور دیتا آیا ہے تاکہ بشارالاسد رجیم کے ہاتھوں عام شہریوں کی قتل و غارت گری کو روکا جا سکے۔

سعودی اخبار "الوطن" کی ایک رپورٹ کے مطابق شامی ڈاکٹر جن میں خواتین ڈاکٹر بھی شامل تھیں، شام کی اپوزیشن اور شامی انقلاب کے نام پر لوگوں سے کم از کم مملکت کے چار شہروں میں فنڈز اکٹھے کر رہی تھیں ۔ جبکہ ان کا اصل ہدف سعودی عرب سے رقم حاصل کرکے بشارالاسد رجیم کومالی وسائل فراہم کرنا تھا۔

اس سلسلے میں نظامت امور صحت کے ذرائع کا کہنا تھا کہ ان شامی ڈاکٹروں کی ملک بدری سے پہلے ملک کے شمالی سرحدی صوبے میں بعض مشکوک ڈاکٹروں کی مسلسل نگرانی کی گئی تھی اور انہیں سیاسی سرگرمیوں ملوث پایا گیا تھا۔ بعد ازاں اس بنیاد پر ان ڈاکٹروں کو سعودی عرب سے'' ڈی پورٹ'' کر دیا گیا ہے۔