.

ترکی و ایران میں سونے کی تجارت بحال ہو گی: ایران

"دیگر شعبوں میں بھی تجارت کو فروغ ملے گا"

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

ایران نے عندیہ دیا ہے کہ اس پر عاید پابندیاں اٹھنے کے بعد ترکی کے ساتھ سونے کی تجارت پھر سے شروع کر دی جائے گی۔ اس امر کا اظہار ترکی میں ایرانی سفیر علی رضا نے انقرہ میں میڈیا سے بات چیت کرتے ہوئے کیا ہے۔

ترکی اور ایران کے درمیان سونے کی تجارت 2012 میں اس وقت عروج پر تھی جب ترکی قدرتی گیس اور تیل کی درآمد کیلیے لیرا ادا کر رہا تھا اور ایران ترکی سے سونا خرید رہا تھا۔

ایرانی سفیر کے مطابق ایران اور ترکی کے درمیان اگرچہ یہ تجارت اس سطح سے کم ہو گی جہاں سے اس کا سلسلہ منقطع ہوا تھا لیکن پابندیوں کے خاتمے کے بعد یہ از سر نو شروع کر دی جائے گی۔

ایک سوال کے جواب میں ایرانی سفیرعلی رضا نے کہا '' گزشتہ سال 2012 میں رقم کی منتقلی میں دشواریوں کی وجہ سے سونے کی تجارت زیادہ تھی، اب یہ کہنا مشکل ہے کہ اسی طرح صورت حال ہو گی یا پہلے سے مختلف ہو گی۔ ''

ایرانی سفیر نے کہا '' ترکی اور ایران کے درمیان بہت سے شعبوں میں تجارت ہو سکتی ہے ، ہم ان تمام شعبوں میں تجارت کو بحال کریں گے۔''