مرحوم شاہ عبداللہ کی سادہ طریقے سے تدفین

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

سعودی عرب کے مرحوم فرمانروا شاہ عبداللہ بن عبدالعزیز کو دارالحکومت الریاض کے العود قبرستان میں انتہائی سادہ انداز میں سپرد خاک کردیا گیا ہے۔

ان کی نماز جنازہ الریاض میں امام ترکی بن عبداللہ مسجد میں نماز عصر کے بعد ادا کی گئی ہے۔اس میں نئے سعودی فرمانروا شاہ سلمان بن عبدالعزیز ،ولی عہد شہزادہ مقرن بن عبدالعزیز ،ولی عہد دوم شہزادہ نایف بن محمد ،دوسرے شہزادوں ،علمائے دین،دانشوروں ،ترک صدر رجب طیب ایردوآن، وزیراعظم پاکستان میاں نواز شریف سمیت عرب اور مسلم دنیا کے متعدد رہ نماؤں ،سفراء اور اعلیٰ حکام نے شرکت کی ہے۔

ان کا جسد خاکی سفید کفن میں لپٹا ہوا تھا اور اس کو روایتی طریقے سے الریاض کے قبرستان میں ایک بے نامی قبر میں دفن کردیا گیا ہے۔مرحوم شاہ عبداللہ کے بیٹوں اور بھتیجوں نے انھیں قبر میں اتارا۔اس موقع پر شاہی خاندان کے دیگر افراد بھی موجود تھے۔

شاہ سلمان بن عبدالعزیز نے ملک بھر کی مساجد میں ان کی غائبانہ نماز جنازہ ادا کرنے کا بھی حکم دیا ہے۔شاہ عبداللہ جمعہ کی صبح مختصرعلالت کے بعد خالقِ حقیقی سے جاملے تھے۔ان کے انتقال کے بعد شاہ سلمان نے اقتدار سنبھال لیا ہے اور اپنے سوتیلے بھائی شہزادہ مقرن بن عبدالعزیز کو ولی عہد اور بھتیجے شہزادہ محمد بن نایف کو ولی عہد دوم مقرر کیا ہے۔انھوں نے اپنے بیٹے محمد بن سلمان کو ملک کا نیا وزیردفاع مقرر کیا ہے۔اس طرح انتقال اقتدار کے عمل میں کوئی خلاء پیدا نہیں ہونے دیا ہے۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں