اپنے دور اقتدار میں اوباما کا دوسرا دورۂ بھارت

براک اوباما کی بھارت آمد پر دلی قلعے میں تبدیل

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

امریکا کے صدر براک اوباما بھارت کے سرکاری دورے پر اتوار کی صبح نئی دہلی پہنچے ہیں۔ وہ پہلے امریکی صدر ہیں جو پیر کو بھارت کے یوم جہموریہ کی تقریب میں شرکت کریں گے۔

نئی دہلی کے ہوائی اڈے پر بھارت کے وزیراعظم نریندر مودی نے مہمان صدر اور خاتون اول مشیل اوباما کا استقبال کیا۔

امریکی صدر کے دورہ بھارت کے موقع پر سکیورٹی کے انتہائی سخت انتظامات کیے گئے ہیں۔ نئی دہلی میں پولیس اور فوج کے تقریباً پچاس ہزار اہلکاروں کی نفری تعینات کی گئی ہے جب کہ پندرہ ہزار سکیورٹی کیمرے نصب کر کے پورے شہر کی نقل و حرکت پر نظر رکھی جا رہی ہے۔

صدر اوباما 2010ء میں بھی بھارت کا دورہ کر چکے ہیں اور یہ ان کا دوسرا سرکاری دورہ ہے۔

امریکی صدر اتوار کو نئی دہلی میں ایک مصروف دن گزاریں گے جس کا آغاز مہاتما گاندھی کی یادگار پر پھولوں کی چادر چڑھانے سے ہوگا اور پھر ان کی میزبان وزیر اعظم نریندر مودی سے بات شروع ہوگی۔

پیر کو وہ بھارت کے یوم جمہوریہ کی مرکزی تقریب میں شرکت کے علاوہ بھارت اور امریکا کی معروف کاروباری شخصیات کی ایک تقریب سے خطاب کریں گے جب کہ دورے کے آخری روز وہ دونوں ملکوں کے تعلقات سے متعلق اپنے لائحہ عمل پر مبنی تقریر کریں گے۔

انھوں نے منگل کو آگرہ میں تاریخی تاج محل کی سیر کے لیے بھی جانا تھا لیکن اب یہ پروگرام منسوخ کر دیا گیا ہے اور امریکی صدر یہاں سے سعودی عرب جائیں گے جہاں وہ مرحوم سعودی فرمانروا عبداللہ بن عبدالعزیز کی وفات پر تعزیت کریں گے۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں