داعش پر فضائی حملوں میں شامی شہری بھی نشانہ بن گئے : پینٹاگان

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

امریکا کے محکمہ دفاع پینٹاگان نے اعتراف کیا ہے کہ اس نے گذشتہ چند روز کے دوران شام میں داعش کے جنگجوؤں پر متعدد فضائی حملے کیے ہیں اور ان میں سے بعض حملوں میں ایسے اہداف کو نشانہ بنایا گیا ہے جن کے نتیجے میں ممکنہ طور پر شہریوں کی ہلاکتیں ہوئی ہیں۔

امریکا کی سنٹرل کمان (سینٹ کام) کی جانب سے جاری کردہ بیان کے مطابق یہ واقعات 7 ستمبر ،10 ستمبر اور 12 ستمبر کو پیش آئے ہیں لیکن اس نے اس فضائی بمباری میں ہلاکتوں یا زخمیوں کی تفصیل نہیں بتائی ہے۔

سینٹ کام کا کہنا ہے کہ 10 ستمبر کو شام کے مشرقی شہر الرقہ کے نزدیک داعش کے ایک ہدف پر فضائی حملے میں شہریوں کی ہلاکتیں ہوئی ہیں۔ 7 ستمبر کو شام کے شہر دیرالزور کے نزدیک داعش کے ایک ہدف پر امریکی طیارے نے بمباری کی تھی لیکن اس کا نشانہ اس علاقے میں آ جانے والی ایک غیر فوجی گاڑی بھی بن گئی تھی۔

12 ستمبر کو شام کے علاقے الشدادہ کے نزدیک داعش کے ایک ٹھکانے پر فضائی حملے میں بظاہر ایک غیر فوجی گاڑی نشانہ بن گئی تھی۔یہ گاڑی بھی طیارے سے بم گرائے جانے کے بعد ہدف کے نزدیک آ گئی تھی۔ واضح رہے کہ پینٹاگان یا امریکی عہدے دار بہت کم اپنے فضائی حملوں میں عام شہریوں کی ہلاکتوں کا اعتراف کرتے ہیں۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں