.

سعودی عرب : 450 کلومیٹر طویل حرمین ٹرین منصوبہ تکمیل کے آخری مراحل میں !

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

مکہ مکرمہ اور مدینہ منورہ کے درمیان ریلوے ٹریک بچھانے کا منصوبہ تکمیل کے آخری مراحل میں ہے۔اس منصوبے پر کام کرنے والی کمپنی نے 450 کلومیٹر میں سے 430 کلومیٹر ٹریک مکمل کر لیا ہے اور جدہ سے مکہ مکرمہ کے درمیان صرف بیس کلومیٹر حصہ باقی رہ گیا ہے۔

ذرائع نے بتایا ہے کہ کمپنی نے پورے ریلوے ٹریک میں ایکسپریس شاہراہوں پر 138 پل تعمیر کیے ہیں اور جدہ میں شاہراہ الحرمین پر ایک پُل بھی تعمیر کیا ہے۔کمپنی نے اونٹوں کے لیے بارہ گذرگاہیں بھی بنائی ہیں۔ندی نالوں اور سیلابی پانی کے لیے ریلوے ٹریک کے نیچے 840 انڈر پاس بنائے ہیں۔توقع ہے کہ تمام حرمین ریلوے ٹریک پر آزمائشی ٹرین دسمبر میں چلے گی۔

اس سال کے اوائل میں سعودی عرب کے ٹرانسپورٹ کے وزیر سلیمان الہمدان نے کہا تھا کہ یہ ٹرین منصوبہ سعودی عرب کے ٹرانسپورٹ کے شعبے میں ایک نمایاں پیش رفت ہے۔

انھوں نے کہا کہ مکہ مکرمہ اور مدینہ منورہ کے درمیان ریلوے کے منصوبے کی بڑی احتیاط سے نگرانی کی گئی ہے۔یہ حکومت کی اولین ترجیحات میں سے ایک تھا۔اس سے دونوں مقدس شہروں کے درمیان سفر میں بہت سہولت حاصل ہو گی۔

انھوں نے شاہ عبداللہ اکنامک سٹی اور مدینہ کے درمیان ٹرین کا آزمائشی سفر کیا تھا اور ٹرین کی کارکردگی کی تعریف کی۔انھوں نے کہا کہ ’’ ٹرین 200 کلومیٹر فی گھنٹا کی رفتار سے چلی تھی۔یہ مکمل ہے اور فعال ہونے کو تیار ہے۔ہماری قومی افرادی قوت بہت اچھا کام کررہی ہے اور سعودی ورکروں کو اسپین ایسے ممالک میں تربیت دی گئی ہے‘‘۔

انھوں نے بتایا ہے کہ ’’450 کلومیٹر طویل ریلوے ٹریک کی تعمیر میں جدید ٹیکنالوجی اور جدید ترین مواد استعمال کیا گیا ہے۔اس پر چلنے والی ٹرین کے جدید انجن اور بوگیاں (کاریں) ہوں گی‘‘۔