جیمس میٹس کا قطر سے پڑوسی ممالک کے خلاف عدم جارحیت کا مطالبہ

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

امریکی وزارت دفاع "پینٹاگون" کے مطابق وزیر دفاع جیمس میٹس کا جمعے کے روز اپنے قطری ہم منصب خالد بن محمد العطیہ کے ساتھ ٹیلیفونک رابطہ ہوا۔

پینٹاگون کے بیان میں بتایا گیا ہے کہ بات چیت میں دونوں شخصیات کے درمیان خلیجی ممالک کے باہمی تعلقات کی صورت حال اور کشیدگی میں کمی لانے کی اہمیت زیر بحث آئی۔ اس کے علاوہ دوحہ اور واشنگٹن کے درمیان "تزویراتی سکیورٹی شراکت داری" کو بھی باور کرایا گیا۔

اس موقع پر جیمس میٹس نے تناؤ میں کمی کی اہمیت پر زور دیا تا کہ خلیج کے علاقے میں ہر ملک مشترکہ اہداف کو یقینی بنانے کے واسطے آئندہ اقدامات پر توجہ مرکوز کر سکے۔

اس سے قبل میٹس نے بعض خلیجی اور دیگر ممالک کی جانب سے قطر کے ساتھ سفارتی تعلقات منقطع کرنے کو انتہائی پیچیدہ صورت حال قرار دیا تھا۔ امریکی وزیر دفاع کے مطابق دوحہ کی جانب سے دہشت گردی کی فنڈنگ روکے جانے کی ضرورت ہے۔

دوسری جانب امریکی وزارت خارجہ کی ترجمان نے ایک پریس کانفرنس میں کہا ہے کہ "قطر اور خلیج تعاون کونسل کے ممالک کے درمیان قائم صورت حال کے حوالے سے ہمیں ابھی تک انتہائی تشویش ہے۔ ہمیں اندیشہ ہے کہ یہ تنازع ڈیڈ لاک کی جانب جا رہا ہے۔ ہم سمجھتے ہیں کہ یہ صورت حال کئی ہفتے بلکہ کئی ماہ تک جاری رہ سکتی ہے"۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں