.

امریکی وزیر خارجہ کی قطر آمد، خلیج بحران کے حل میں مدد کے لیے پُرامید

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

امریکی وزیر خارجہ ریکس ٹیلرسن قطر اور چار عرب ممالک کے درمیان جاری تنازع کے حل کے لیے مذاکرات کی غرض سے کویت سے قطر کے دارالحکومت دوحہ پہنچے ہیں اور انھوں نے قطری وزیر خارجہ شیخ محمد بن عبدالرحمان سے ملاقات کی ہے۔

انھوں نے سوموار کے روز کویت میں امیر شیخ صباح الاحمد الصباح سے ملاقات کی تھی اور ان سے قطری بحران کے حل کے حوالے سے تبادلہ خیال کیا تھا۔انھوں نے اس بحران کے طول پکڑنے پر تشویش کا اظہار کیا تھا۔

شیخ صباح الاحمد قطر اور چار عرب ممالک سعودی عرب ، بحرین ،متحدہ عرب امارات اور مصر کے درمیان مصالحت کے لیے ثالث کا کردار ادا کررہے ہیں اور چاروں ممالک اور قطر ان ہی کے ذریعے ایک دوسرے سے مراسلت کررہے ہیں۔

امریکا بھی اس سفارتی بحران کو طے کرانے کے لیے کوشاں ہے۔ گذشتہ جمعرات کو اس کے وزیر دفاع جیمز میٹس نے قطری وزیر مملکت برائے دفاع خالد العطیہ سے ٹیلی فون پر گفتگو کی تھی اور ان سے کشیدگی کم کرنے کے حوالے سے تبادلہ خیال کیا تھا۔

واضح رہے کہ قطر میں امریکی فضائیہ کا خطے میں سب سے بڑا اڈا ہے جبکہ سعودی عرب عشروں سے امریکا کا قریبی اتحادی ہے اور صدر ڈونلڈ ٹرمپ کے مئی میں سعودی عرب کے دورے کے موقع پر دونوں ملکوں کے درمیان 110 ارب ڈالرز مالیت کے دفاعی سودے طے پائے تھے۔