.

زھراء مریخی ’مجاھدین خلق‘ کی نئی سیکرٹری جنرل منتخب

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

ایران کی اپوزیشن کی نمائندہ مجاھدین خلق کی نئی قیادت کا چناؤ عمل میں آیا ہے۔ تنظیم کی جنرل کانفرنس میں زھراء مریخی کو مجاھدین خلق کی نئی سیکرٹری جنرل منتخب کیا گیا۔

العربیہ ڈاٹ نیٹ کے مطابق بدھ کے روز البانیا کے دارالحکومت تیرانا میں منعقدہ مجاھدین خلق کی 52 ویں تاسیسی اجلاس کے دوران نئی قیادت کا انتخاب عمل میں آیا۔

خیال رہے کہ مجاھدین خلق کے دستور کے مطابق جماعت کے سیکرٹری جنرل کا انتخاب دو سال کے لیے ہوتا ہے مگر اس عہدے کی مدت میں تین بار توسیع کی جا سکتی ہے۔

پہلے مرحلے میں مرکزی کونسل کے ارکان اپنی رائے دیتے ہیں۔ دوسرے مرحلے میں تنظیم کے مختلف عہدیداروں کی رائے لی جاتی ہے اور تیسرے مرحلے میں جنرل کانفرنس کے دوران ہاتھ اٹھا کر اعلانیہ طور پر نئی قیادت کا چناؤ عمل میں لایا جاتا ہے۔

زھراء مریخی نے 20 اگست 2017ء کو ہونے والی رائے دہی میں مرکزی کونسل کی طرف سے 86 فی صد ووٹ ملے۔ مجموعی طور پران کا مقابلہ 12 امیدواروں کے ساتھ تھا۔ رائے شماری کا دوسرا مرحلہ 3 ستمبر کو 10 مراکز میں طے پایا جس میں مریخی نے 84 فی صد ووٹ لیے۔ تیسرے اور آخری مرحلے میں انہیں گذشتہ روز تنظیم کی نئی سیکرٹری جنرل منتخب کرلیا گیا۔

زھراء مریخی کون ہیں؟

مریم مریخی سنہ 1959ء کو شمالی ایران کے شہر 'قائم شہر' میں پیدا ہوئیں۔ انہوں نے مجاھدین خلق مین سابق ایرانی بادشاہ کے دور میں شمولیت اختیار کی۔ سنہ 1979ء کے انقلاب کے بعد مریم مریخی کو قائم شہر میں خواتین ونگ کی سربراہ مقرر کیا گیا۔ بعد ازاں انہیں مجاھدین خلق کے ترجمان اخبار ’مجاھد‘ کی ادارتی ٹیم کا حصہ بنایا گیا۔ سنہ 1981ء میں مریم مریخی کو مجاھدین خلق کی مختلف یونٹوں کے درمیان رابطہ کار کے طور پر تعینات کیا گیا۔

سنہ 1984ء کو انہیں عراق اور ایران کی سرحد پرقائم مجاھدین خلق کے مراکز میں منتقل کردیا گیا جبکہ سنہ 1985ء میں انہیں تنظیم کی مرکزی کمیٹی کی رکن مقرر کیا گیا۔ مریم مریخی کے بھائی علی مریخی 1988ء کو پاسداران انقلاب کے ساتھ ایک جھڑپ میں مارے گئے۔ مریم مریخی کئی سال سے مجاھدین خلق کے ساتھ وابستہ ہونے کے باعث تنظیم کے اہم عہدوں پر کام کر چکی ہیں۔