ایرانی بلوچستان میں سرحدی چوکی پر حملہ، متعدد ہلاک اور زخمی

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

ایران کے صوبہ بلوچستان کے سرحدی علاقے سراوان میں کل اتوار کے روز ایک سرحدی چوکی پر خود کش حملے میں بسیج ملیشیا کا ایک اہلکار ہلاک اور دو زخمی ہوگئے۔

خبر رساں ادارے ’تسنیم‘ کی جانب سے جاری کردہ ایک بیان میں کہا گیا ہے کہ مسلح افراد کےایک گروپ نے چوکی کے اندر گھسنے کی کوشش کی مگر سیکیورٹی حکام نے جوابی کارروائی کرتےہوئے عسکریت پسندوں کو بھگا دیا۔ اس موقع پر ایک شدت پسند نے خود کو دھماکے سے اڑا دیا جس کے نتیجے میں ایک بسیج اہلکار ہلاک اور دو زخمی ہوگئے۔

ایرانی حکام نےواقعے کو دہشت گردانہ کارروائی قراردیا ہے۔ پاسداران انقلاب کا کہنا ہے کہ خود کش بمبار نے چوکی کے اندر داخل ہونے کی کوشش کی جسےگولیاں ماری گئیں۔ اس دوران اس نے خود کو دھماکے سے اڑا دیا جس کے نتیجے میں دو سیکیورٹی اہلکار زخمی بھی ہوئے ہیں۔

خیال رہے کہ ایرانی سرحدی شہر سراوان علاحدگی پسند بلوچ عسکریت پسندوں کی وجہ سے شورش کا شکار رہا ہے۔ جنوری 2017ء کو اس علاقے میں ہونے والے ایک حملے میں پاسداران انقلاب کا ایک اہلکار ہلاک اور تین زخمی ہوگئے تھے۔

پاکستان کی جنوب مشرقی سرحد سے متصل سراوان اور جکیگور کے مقامات پر اس سے قبل بھی متعدد بار حملے کیے جا چکےہیں۔ گذشتہ جمعہ کو بھی اس علاقے میں ایرانی سیکیورٹی فورسز اور عسکریت پسندوں کے درمیان جھڑپ ہوئی تھی۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں