.

یمن کے مشرقی صوبے حضر موت میں القاعدہ کی دہشت گردی کی بڑی سازش ناکام

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

یمن کی سکیورٹی فورسز نے مشرقی صوبے حضر موت میں القاعدہ کی دہشت گردی کی ایک بڑی سازش ناکام بنا دی ہے۔ اس صوبے کے گورنر اور یمنی فوج کے سیکنڈ ملٹری زون کے کمانڈر فراج البحسنی نے منگل کو اس امر کی تصدیق کی ہے کہ القاعدہ کی صوبائی دارالحکومت المکلا میں ایک سے زیادہ جگہوں پر حملوں کی سازش کو ناکام بنا دیا گیا ہے۔

گورنر نے ایک بیان میں کہا ہے کہ القاعدہ نے بڑی ہوشیاری سے دہشت گردی کی کارروائیوں کی منصوبہ بندی کی تھی اور انھوں نے رمضان المبارک کے آخری ایام اور عید الفطر کے موقع پر ایک سے زیادہ جگہوں کو اپنے حملوں میں نشانہ بنانا تھا لیکن سکیورٹی فورسز اور انٹیلی جنس سروسز نے اس کو بروقت کارروائی کرکے ناکام بنا دیا ہے‘‘۔

انھوں نے مزید بتایا:’’ سکیورٹی ، ملٹری اور انٹیلی جنس سروسز نے القاعدہ کی دہشت گردی کی کارروائیوں کے لیے تیاریوں کی ٹھیک ٹھیک نگرانی جاری رکھی تھی اور انھیں عین وقت پر جالیا ہے۔فوج ، سکیورٹی ، انٹیلی جنس اور انجنئیرنگ سروسز نے منگل کو انتہا پسندوں کے ایک ٹھکانے پر چھاپا مار کارروائی کی ہے جہاں انھوں نے تباہی پھیلانے کے لیے مواد چھا رکھا تھا‘‘۔

انھوں نے بتایا ہے کہ ’’ اس جگہ سے 28 دھماکا خیز ڈیوائسز ، بھاری مقدار میں بارودی مواد ، انتہا ئی دھماکا خیز مواد سی 4 کے چار تھیلے ، دو تھرمو کوپلز اور بھاری تعداد میں مختلف اقسام کی گولیاں برآمد ہوئی ہیں۔یہ تمام مواد کسی بھی جگہ پر بڑے پیمانے پر تباہی پھیلانے کے لیے کافی تھا‘‘۔