ناروے کے دو سیاست دانوں نے ڈونلڈ ٹرمپ کو نوبل امن انعام کے لیے نامزد کردیا

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

ناروے کے دو سیاست دانوں نے امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ کو شمالی کوریا کے لیڈر کِم جونگ اُن سے سنگاپور میں ملاقات کے بعد نوبل امن انعام کے لیے نامزد کردیا ہے۔

ناروے کی جماعت پراگریس پارٹی سے تعلق رکھنے والے رکن پارلیمان کرسٹیئن ٹائی برنگ جیڈ اور پر ولی امونڈسین نے نارویجئن نیوز ایجنسی این ٹی بی سے گفتگو کرتے ہوئے کہا ہے کہ ’’ ڈونلڈ ٹرمپ نے شمالی اور جنوبی کوریا کے درمیان امن اور مصالحت کرانے اور خطے کو ہتھیاروں سے پاک کرنے کےلیے اہم قدم اٹھایا ہے‘‘۔

امریکی کانگریس کے ایک گروپ نے بھی صدر ٹرمپ کو 2019ء کے نوبل امن انعام کے لیے نامزد کرنے کی حمایت کا اظہار کیا ہے۔

نوبل امن انعام کے لیے ناروے کی نوبل امن کمیٹی کو امیدواروں کے نام بھیجے جاتے ہیں اور وہی ان ناموں کا جائزہ لینے کے بعد کامیاب امیدوار کا اعلان کرتی ہے۔نوبل امن کمیٹی کو ہر سال یکم فروری سے قبل نام بھیجے جانے چاہییں ۔نامزد ناموں کے بارے کے بارے میں نوبل امن کمیٹی کو ئی عوامی بیان جاری نہیں کرتی اور وہ ان ناموں کو پچاس سال تک خفیہ رکھنے کی پابند ہے۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں