ایران کے جدید بیلسٹک میزائل کی رونمائی ، دفاعی صلاحیتیں بڑھانے کا عزم

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
3 منٹس read

ایران کے وزیر دفاع نے مختصر فاصلے تک مار کرنے والے بیلسٹک میزائل ’’فتح مبین‘‘ کی نسلِ نو کی رونمائی کردی ہے۔

ایران کی نیم سرکاری خبررساں ایجنسی تسنیم کی رپورٹ کے مطابق وزیر دفاع بریگیڈئیر جنرل امیر حتمی نے کہا ہے کہ ’’ہمارے پیارے عوام سے کیے گئے وعدے کے مطابق ہم ملک کی میزائل صلاحیتوں میں اضافے کے لیے کوئی دقیقہ فروگذاشت نہیں کریں گے اور ہم اپنی میزائل طاقت کو روزانہ کی بنیاد پر بڑھائیں گے‘‘۔

انھوں نے نئے میزائل فتح مبین کے بارے میں بتایا ہے کہ یہ 100 فی صد ایران ساختہ ہے۔یہ راڈار پر نظر نہیں آسکتا اور ہدف کو ٹھیک ٹھیک نشانہ بنانے کی صلاحیت رکھتا ہے۔

وزیر دفاع نے کہا:’’ یقین رکھیں ، ایران کی عظیم قوم پر جتنا دباؤ ڈالا جائے گا اور اس کے خلاف نفسیاتی جنگ کا جو بھی حربہ آزمایا جائے گا ، اس کے مقابلے کے لیے ہم تمام شعبوں میں اپنی دفاعی صلاحیتوں میں اضافہ کریں گے‘‘۔

واضح رہے کہ ایرا ن کا میزائل پروگرام عالمی طاقتوں اور بالخصوص امریکا کے ساتھ تنازع میں سب سے بڑی وجہ نزاع ہے لیکن ایران اپنے اس پروگرام کو اس شورش زدہ خطے میں اپنے دفاع کے لیے اہم قرار دیتا ہے۔

امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ ایران کے ساتھ ایک نئے سمجھوتے کی پیش کرچکے ہیں جس کے تحت اس کی میزائل صلاحیتوں کو محدود کیا جاسکے اور اس کی علاقائی سطح پر مداخلت کو بھی روکا جاسکے لیکن ایرانی سپریم لیڈر آیت اللہ علی خامنہ ای نے امریکا کے ساتھ براہ راست مذاکرات پر پابندی عاید کردی ہے۔

ان کا کہنا ہے کہ امریکا بالکل ناقابل اعتبار ہے اور وہ مذاکرات کے دوران کیے گئے وعدوں کو ایفا نہیں کرتا ہے۔امریکی صدر نے مئی میں ایران سے جولائی 2015ء میں طے شدہ جوہری سمجھوتے سے دستبردار ہونے کا اعلان کردیا تھا اور ان کی انتظامیہ نے 6 اگست کو ایران کے خلاف نئی اقتصادی پابندیاں عاید کردی ہیں۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں